اپنا دیشتازہ ترین خبریں

دہلی کی صرف ہوا ہی نہیں، پانی بھی ہے سب سے زیادہ آلودہ

ایک طرف تو فضائی آلودگی دہلی والوں کے لئے وبال جاں بنی ہوئی ہے لیکن اب ہوا کے ساتھ ساتھ پائپ کے ذریعے گھروں میں آنے والے پینے کے پانی بھی زہر ثابت ہونے والے ہیں، کیونکہ انڈین اسٹینڈرڈ بیورو نے دہلی کے علاوہ بیس ریاستوں کی راجدھانیوں میں پینے کے پانی کے نمونوں کی جانچ کرائی ہے۔ جس میں ممبئی کا پانی سب سے اچھا پایا گیا ہے لیکن دہلی میں کئی مقامات پر پانی پینے کے لائق بھی نہیں ہے۔

یاد رہے کہ خوراک اور صارفین امور کے وزیر رام ولاس پاسوان نے آج یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ انڈین اسٹینڈرڈ بیورو نے دہلی کے علاوہ بیس ریاستوں کی راجدھانیوں میں پینے کے پانی کے نمونوں کی جانچ کرائی ہے۔ ان میں ممبئی کے پینے کے پانی کا نمونہ سب سے بہتر پایا گیا ہے۔ قومی دارالحکومت میں گیارہ مقامات سے پائپ سے آنے والے پینے کاپانی کا نمونہ لیا گیا تھا جن میں زیادہ تر پینے کے پانی کے کمترین معیار پر بھی پورا اترنے میں ناکام رہے۔ دہلی کے پانی میں دیگر مہلک عناصر کے علاوہ بیکٹیریا بھی پائے گئے ہیں۔

خیال رہے کہ پانی کے نمونوں کو 48 پیمانوں (پیرامیٹر) پر جانچا جاتا ہے۔ دہلی کا پانی 19پیرامیٹر کو پورا کرنے میں ناکام ثابت ہوا ہے۔ مرکز ی وزیر نے کہاکہ پینے کا صاف پانی کے مسئلہ کے سلسلے میں وہ کوئی سیاست نہیں کر رہے ہیں۔ لوگوں کو پینے کا صاف پانی حاصل کرنے کا حق ہے۔ گندے پانی سے لوگ کئی طرح کی بیماریوں کا شکار ہوتے ہیں اور چھوٹے بچوں کو زیادہ نقصان ہوتا ہے۔ مرکزی حکومت نے سال 2024 تک ہر گھر کو نل کا پانی فراہم کرانے کا منصوبہ شروع کیا ہے۔

مسٹر پاسوان نے کہا کہ حیدرآباد‘ بھونیشور اور رانچی کے پانی کے نمونوں میں معمولی خرابی پائی گئی ہے۔ رائے پور، امراوتی،شملہ اور چنڈی گڑھ کے پانی کے نمونے خراب پائے گئے ہیں۔ پٹنہ، بھوپال‘ چینئی اور کولکاتہ کے پانی کے نمونے بھی جانچ میں ناکام ثابت ہوئے ہیں۔ لکھنؤ اور جموں کے پانی کے نمونے بھی خراب پائے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے 100اسمارٹ شہروں کے پینے کے پانی کے نمونوں کو جانچ کے لئے بھیج دیا گیا ہے اور 15جنوری تک اس کی رپورٹ آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ پائپ سے سپلائی ہونے والے پینے کا پانی کو معیار کو نافذ کرنے کے نظم کو ابھی تک لازم نہیں کیا گیا ہے۔ جس کی وجہ سے حکومتیں اپنے اپنے طریقے سے اس معاملے کو دیکھ رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ یاستوں میں پیرامیٹر کے مطابق پینے کا پانی سپلائی کرنے کی درخواست کی گئی ہے اور اس سمیت میں ان کی مسلسل کوشش جاری رہے گی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close