تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کا پھر اٹھا معاملہ

بجٹ سیشن میں ایکونومی سروے پیش کئے جانے کے ساتھ دلی کو مکمل ریاست درجہ پر ہوئی بحث کو 1 مارچ سے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کو بھوک ہڑتال پر بیٹھیں گے: کجریوال، ایل جی کے ’میری سرکار ‘ کہنے پر ’آپ‘ ارکان اسمبلی کا اعتراض

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دلی اسمبلی میں ایک بار پھر دہلی کو مکمل ریاست دیئے جانے کا معاملہ اٹھ گیا ہے۔ دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال نے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کے لئے غیر معینہ بھوک ہڑتال کر نے کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعلی نے آج کہا کہ وہ یکم مارچ سے تب تک بھوک ہڑتال پر رہیں گے، جب تک دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ نہیں مل جاتا۔

وزیر اعلی اروند کیجریوال نے دہلی اسمبلی میں آج دہلی کو مکمل ریاست دلانے پر جاری بحث میں بول رہے تھے۔ رو ل 55میں رکن اسمبلی بھائونا گوڑ کی جانب سے جذوی مباحثہ میں دہلی کو مکمل ریاست دیئے جانے کے سلسلے میں بحث شروع کی گئی۔ جس میں ان کے ساتھ نریش یادو اور وجیندر گرگ سمیت دیگر ارکان اسمبلی نے دہلی کو ممکمل ریاست کا درجہ دینے کی حمایت کی۔ اسی موضوع پر بو لتے ہوئے وزیر اعلی کجریوال نے کہا کہ یکم مارچ سے میں دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کےلئے غیر معینہ بھوک ہڑتال پر رہوں گا۔ کیجریوال نے مزید کہا کہ ہم ایک تحریک شروع کریں گے اور دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کا مطالبہ کریں گے، یہ بھوک اس وقت تک چلے گی جب تک دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ نہیں مل جاتا۔

کیجریوال نے ایوان میں کہاکہ دہلی کے لوگوں نے ہمیں اتنا کچھ دیا ہے کہ ہمیں ان کےلئے اپنی زندگی بھی قربان کرنا پڑے تو کم ہے، اس لئے میں یکم مارچ سے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کےلئے غیر معینہ بھوک ہڑتال کروں گا۔ کجریوال نے کہا کہ آزادی سے دہلی کے لوگ ناانصافی اور بے عزتی کا سامنا کر رہے ہیں۔ کیونکہ ان کی طرف سے منتخب کردہ حکومت کے پاس ان کےلئے کام کرنے کی طاقت نہیں ہے، دہلی منتخب حکومت لوگوں کو انصاف نہیں دے سکتی، ان کےلئے کام نہیں کر سکتی اور ترقیاتی کام کو پورا نہیں کر سکتی، کیونکہ اس کے حقوق کی کمی ہے اور مرکزی حکومت ان کے کام کاج میں رخنہ ڈالتی ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کیا دہلی کے رائے دہندگان کی ویلیو دیگر ریاستوں سے کم ہے؟ کیجریوال نے کہا کہ مرکزی حکومت دہلی پولیس، میونسپل کارپوریشن اور ڈی ڈی اے ڈی کو قابو کر رکھا ہے۔ لہذا لوگوں کو بڑھتے جرائم، صفائی کی کمی اور ترقی کی خامی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

بجٹ اجلاس میں ایل جی کے خطاب کے بعد آج باقائدہ شروع ہوئی کاروائی میں جہاں ایل جی کی جانب سے اپنے خطاب میں دہلی حکومت کو ’میری حکومت‘ کہنے پر آپ ارکان اسمبلی نے اعتراض جتایا وہیں دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کا معاملہ پر بھی ترجیح کے ساتھ زیر بحث لایا گیا۔ ایوان کی کاروائی کے آ غاز میں حالانکہ کورم پورا نہ ہونے پر کاروائی کو آدھا گھنٹے کےلئے ٹال دیا گیا اور دو بارہ کاروائی شروع ہونے پر ایل جی کے خطاب پر اظہار تشکر میں ایل جی کے میری سرکار کہنے پر راکھی بڑلان، نتن تیاگی اور دیگر نے اعتراض جتائے۔ وہیں نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے کہا کہ اسی کا نام جمہوریت ہے کہ ایک جانب ایل جی دہلی حکومت کے مفاد عامہ کے منصوبوں کو روکتے ہیں اور جب ہم کو ششیں کرکے دھرنے، بھوک ہڑتال کرکے وہ کام کرا لیتے ہٰیں تو وہ ایل جی جو فائل روکے ہوئے تھے، اس اسکیم کے لاگو ہونے پر میری سرکار کے کام کہہ کر حصولیابی گنواتے ہیں۔

وزیر اعلی اروند کیجریوال نے صحافی سے گفتگو کرتے ہوئے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دیئے جانے پر کہا کہ پورے ملک میں جمہوریت نافذ ہے لیکن یہ دہلی میں نہیں ہے۔ لوگ ووٹ اور حکومت کا انتخاب کرتے ہیں، لیکن حکومت کو کوئی طاقت نہیں ہے۔ لہذا ہم مارچ 1 کے بعد بھوک ہڑتال کی تحریک شروع کر رہے ہیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close