تازہ ترین خبریںدلی نامہ

’دہلی کانگریس‘ نے پیش کی ’آپ حکومت‘ کی پوسٹ مارٹم رپورٹ

سوراج اور لوک پال کے نام پرکنارہ کشی کر چکی ہے ’آپ‘: سبھاش چوپڑا

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر سبھاش چوپڑا نے آج عام آدمی پارٹی کی دہلی حکومت کے دس نکات پر مشتمل رپورٹ پر تنقید کرتے ہوئے اسے جھوٹ کا پلندا بتاتے ہوئے اس کی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری کی۔

ریاستی کانگریس کے ڈفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس میں انہوں نے کانگریس کے ذریعہ شواہدودستاویز کے ساتھ ایک اصلی رپورٹ بھی پیش کی۔ اس موقع پر سابق ایم پی جے پی اگروال، سندیپ دکشت، رمیش کمار، کرشنا تیرتھ، مہابل مشرا، کیرتی آزاد، دیویندر یادو، راجیش للوٹھیا، سابق رکن اسمبلی چودھری متین احمد، مکیش شرما، تروندر سنگھ مارواہ، ویر سنگھ دھینگان بھی موجود تھے۔

سبھاش چوپڑا نے کہاکہ عام آدمی پارٹی کی بنیاد جھوٹ فریب کے ساتھ جھوٹے اشتہارات پر ٹکی ہوئی ہے اور اب یہ سرکار اپنے بقیہ تین مہینوں میں اپنے آپ کو بچانے کے لئے متعدد جھوٹ بول رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سوراج اور لوک پال کے نام پر اقتدار میں آئی عام آدمی پارٹی دونوں ہی معاملوں سے پوری طرح کنارہ کشی کر چکی ہے کانگریس نے جو لوک آیکت دیا تھا اس کو بھی اس سرکار نے بالکل بے اثر کردیا ہے۔ انہوں نے طنز کستے ہوئے کہا کہ کجریوال نے دہلی والوں کو گندہ پانی اور آلودگی والی ہوا کی سوغات دی ہے جس کے چلتے آج پوری دہلی کھانس رہی ہے پہلے وہ اکیلے کھانستے تھے۔

جے پرکاش اگروال نے کہا کہ کجریوال سرکار نے 8532 کروڑ روپیہ کا بجلی گھوٹالہ کرکے پرائیویٹ کمپنیوں کو فائدہ پہنچایا ہے ان کمپنیوں کا سی اے جی آڈٹ نہیں کرایا گیا۔ 82 فیصد دہلی جس میں چھوٹے دکاندار، گھریلو صنعت شامل ہیں ان کے بجلی کے بلوں میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔ سندیپ دکشت نے کہاکہ صحت کے شعبہ میں مخصوص بجٹ میں پچھلے پانچ سالوں میں 46 فیصد خرچ ہی نہیں کیا گیا۔ صرف بجٹ کو بڑھا چڑھا کر کاغذوں میں دکھاتے رہے۔ مہابل مشرا اور رمیش کمار نے کہا کہ کچی کالونیوں میں رہنے والے لوگوں کے ساتھ عام آدمی پارٹی نے دھوکہ کیا ہے۔ اس سرکار نے آج تک ایک بھی کچی کالونی کو پکی نہیں کیا۔

ترجمان مکیش شرما نے کہا کہ شیلا دکشت سرکار کی مونو ریل چلانے کے منصوبے کو اس سرکار نے ٹھنڈے بستے میں ڈال دیا۔ جبکہ آج ٹریفک جام سے راحت دلانے کے لئے یہ منصوبہ بہت کارگر ثابت ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے اپنی حکومت میں جن کاموں کو کرانے کے ٹینڈر جاری کئے تھے یہ سرکار انہیں بھی پورا نہیں کرا سکی۔ کیرتی آزاد اور چودھری متین احمد نے کہاکہ کجریوال سرکار نے چار سالوں میں ایک لاکھ بتیس ہزار بچوں کو اسکول سے باہر نکالا جبکہ کانگریس کے دور حکومت میں داخلے بڑھے تھے۔ اس سرکار نے کوئی نیا کالج، نیا اسکول، یا یونیورسٹی نا اسپتال بنایا اور نہ کہیں پیڑ لگائے اور نہ ہی انفرا اسٹرکچر نیا بنایا گیا۔

دیویندر یادو، راجیش للوٹھیا اور تروندر سنگھ مارواہ نے کہا کہ اس سرکار نے وعدہ کیا تھا کہ آٹھ لاکھ نئے روزگار دیں گے لیکن آج دہلی میں بے روزگاری کی شرح 16 فیصد ہوگئی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close