تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی میں دو روزہ سوگ کا اعلان

دہلی کی سابق وزیراعلیٰ اور سینئرکانگریس لیڈر شیلا دکشت کے انتقال پر دہلی میں دو دنوں کے ریاستی سوگ کا اعلان کیا گیا ہے۔ جس کا اعلان دہلی کے نائب وزیراعلیٰ منیش سسودیا نے کیا انہوں نے اپنے ٹوئٹر پر خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اپنے تعزیتی پیغام میں لکھاکہ ’’دہلی کی سابق وزیراعلیٰ محترمہ شیلا دیکشت جی کے انتقال کی خبر بے حد تکلیف دہ ہے۔ خدا ان کی روح کو سکون فراہم کرے اور خاندان کو یہ خسارہ برداشت کرنے کی طاقت دے۔‘‘

بتا دیں کہ ہفتہ کی صبح انہیں اچانک دل کا دورہ پڑا تھا جس کے بعد انہیں اوکھلا واقع اسکارٹ اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا، لیکن وہ صحت یاب نہیں ہو سکیں۔ وہ طویل وقت سے بیمار تھیں۔ ہفتہ کی دوپہر 3:30 بجے 81 سال کی شیلا دکشت نے اسکارٹ اسپتال میں آخری سانس لی۔ اسکارٹس اسپتال کے ڈائریکٹر اشوک سیٹھ نے کہا کہ ’’ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے شیلا دیکشت کی اچھی طرح سے دیکھ بھال کی تھی۔ 3 بج کر 15 منٹ پر انھیں پھر سے دل کا دورہ پڑا۔ اس کے بعد انھیں ونٹلیٹر پر رکھا گیا تھا اور دوپہر 3.55 بجے ان کا انتقال ہوگیا۔‘‘

شیلا دکشت کا نام کانگریس کے ان قدآور لیڈروں میں سب سے اوپر ہے، جنہوں نے طویل وقت تک کانگریس کی حکومت کو ریاست میں مضبوطی سے بنائے رکھا۔ اس خبر کو سنتے ہی کانگریس رکن پارلیمنٹ اور سابق پارٹی صدر راہل گاندھی نے ان کے انتقال کی خبر کو اندوہناک بتایا اور کہا کہ ’’شیلا جی نے دہلی کے لیے بے لوث خدمات انجام دیے جسے بھلایا نہیں جا سکتا۔‘‘

وہیں مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے بھی دہلی کی سابق وزیر اعلیٰ شیلادکشت کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ان کی کمی ہمیشہ محسوس ہوگی۔ انہوں نے ٹوئیٹ کیاکہ ”سابق وزیراعلیٰ شیلا دکشت کے انتقال کی اچانک خبر ملی ہے، جب میں پہلی مرتبہ 1985 میں ممبر پارلیمنٹ منتخب ہوئی تھی تو پارلیمانی امور کی وزیر تھیں، وہ ہمیشہ بہتر تعلقات رکھنے والی تھیں۔ ہمیں واقعی ان کی کمی محسوس ہوگی۔‘‘ ان کے علاوہ کئی سیاسی جماعتوں کی طرف سے ان کے انتقال پر گہرے رنج وغم کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close