تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی میں بنے گی ایشیا کی سب سے بڑی اسپورٹس یونیورسٹی

دہلی اسمبلی اسپورٹس یونیورسٹی 2019 پاس، ملک کے کھلاڑیوں کے لئے ’مکہ، مدینہ ہوگی یہ یونیورسٹی: کجریوال

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی اسمبلی کے دو روزہ اجلاس میں آج اسپورٹس یونیورسٹی بل کو ایوان کی منظوری مل گئی ہے۔ دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے اسپورٹس یونیورسٹی 2019 کا بل پیش کیا۔جس پر بحث کے بعد اتفاق رائے سے ایوان نے اسے منظور کرلیا۔

اسپورٹس یو نیورسٹی بل کی حمایت کرتے ہوئے وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ یہ اسپورٹس یو نیورسٹی نہ صرف دہلی کے کھلاڑی اور نو جوانوں کو بلکہ ملک کے جتنیہو نہار کھالڑی ہیں ان کو موقع دے گی۔ یہ یو نیورسٹی ملک کے کھلاڑیوں کیلئے ’مکہ، مدینہ‘ ہو گی۔ یہ ایشیا کی سب سے بڑی یو نیورسٹی ہو گی، یہاں ملک بھر کے کھلاڑی آئیں گے ان کا خواب پورا ہو گا۔ وزیر اعلی نے کہاکہ آئندہ برسوں میں دہلی اسمبلی میں رکھے گئے اس اسپورٹس یو نیورسٹی بل 2019 کو یاد کیا جائے گا۔ یہ یو نیورسٹی ملک کے نوجوان اور کھلاڑیوں کے خوابوں کی تعبیر ہو گی۔

انہوں نے کہاکہ 70سال سے جا ن بوجھ کر ملک کو غیر تعلیم یافتہ اور پیچھے رکھا گیا ہے لیکن آ ج کا یہ بل تمام دیش بھکتوں کا خواب پو را کرے گا۔ ہم چا ہتے ہیں کہ ہمارے کھالڑی زیادہ سے زیادہ میڈل جیت کر لائیں اسی خواب کے ساتھ اس اسپورٹس یو نیورسٹی کا بل لایا گیا ہے۔ وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ اس خواب کو پورا کرے بغیر میں مرنے والا نہیں ہوں،یہ خواب پورا ہو تے ہوئے میں ضرور دیکھوں گا۔چائنا نے 32سال کے بعد گولڈ میڈل جیتے ہیں ہم یہ پہلے ہی کر دکھائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ ملک کھلاڑیوں اور نو جوانوں میں صلاحیت کی کمی نہیں ہے۔صرف سپوٹ کی کمی ہے۔جو دیگر حکومتیں کھلاڑیوں کو سپوٹ کر تی ہیں وہ ہماری حکومت نہیں کر پاتیں۔ اسی درد کے مد نظر یہ یو نیورسٹی بنائی جا رہی ہے۔یہ بل کوئی کاغذ کا ٹکڑا نہیں ہے بلکہ یہ ملک نو جوانوں اور کھلاڑیون کا خواب ہے،جسے ہم پورا کریں گے۔

وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ عام آ دمی پارٹی کٹّر دیش بھکت پارٹی ہے اورآپ‘ کا ہر کارکن کٹّر دیش بھکت ہے۔سوتے جاگتے، اٹھتے بیٹھتے ہم ملک کے بارے میں سوچتے ہیں۔بین اقوامی سطح پر جب ہم کھیل میں پچھڑ جا تے ہیں تو افسوس ہو تا ہے۔محب وطنوں کو درد ہو تا ہے کہ ہم میں کہاں کمی رہ گئی۔کیا ہم کم ہیں، نہیں! اس زمین پر ہمارا ملک سب سے بہتر ہے، دوسرے ممالک سے کم نہیں ہے۔کجریوال نے کہاکہ میں یہ مانتا ہوں کہ جب انسان کو پیدا کیا گیا تو سب سے بہتر لوگ ہندوستان مٰں پیدا کئے گئے۔کھلاڑیوں اور نو جوانوں میں کمی نہیں ہے،صرف ان کو سپورٹ کی کمی ہے۔ 70سال میں المپک میں 28میڈل جیتے ہیں۔

بتا دیں کہ دہلی حکومت نے منڈکااسپورٹس یو نیورسٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اسپورٹس یونیورسٹی 90 ایکڑ اراضی پر قائم کی جائے گی۔ اس سے ملک میں پہلی بار کھیلوں کی ڈگری ملے گی۔ اپنی صلاحیتوں پر منحصر، کھلاڑی کرکٹ، ہاکی، فٹ بال وغیرہ میں گریجویٹ، پوسٹ گریجویٹ اور پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کرسکیں گے۔ کچھ دن پہلے نائب وزیر اعلی منیش سسوڈیا نے ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ اب طلباء کی کھیل ان کی تعلیم ہوگی۔ اس سے قبل اپوزیشن لیڈر وجیندر گپتا، جگدیش پردھان، او پی شرما اور منجیت سنگھ سرسا نے پانی کے معاملے پر اجلاس کے پہلے ہی دن ایوان سے واک آؤٹ کیا۔ وہ آلودہ پانی کی بوتلیں لے کر آئے، جو مبینہ طور پر شہر یوں کو فراہم کی جارہی ہیں۔

گپتا نے صحافیوں کو بتایا کہ ہم دہلی میں آلودہ پانی کی فراہمی پر تبادلہ خیال کرنا چاہتے تھے۔ ہم نے توجہ طلب کرنے اور بحث کیلئے اجازت مانگی۔اپوزیشن کے مطالبے پر اسمبلی کے اسپیکر رام نواس گوئل نے کہا کہ وہ فہرست میں شامل موضوعات کے علاوہ دیگر موضوعات پر بحث کی اجازت نہیں دیں گے۔ اسپیکر کے فیصلے کے بعد اپوزیشن کے چاروں ایم ایل اے احتجاج کرنے ایوان سے واک آؤٹکر گئے۔سرسا نے کہاکہ اروند کجریوال اور ان کی حکومت دہلی کے عوام کو زہریلا پانی دے رہی ہے۔ آج ہم اس پر تبادلہ خیال کرنا چاہتے تھے لیکن دہلی حکومت اس سے بھاگ رہی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close