تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی حکومت نے پیش کیا 60ہزار کروڑ روپے کا مجاوز بجٹ

گزشتہ برسوں سے دوگنا ہو گیا ہے بجٹ، تعلیم اور صحت پر رہی ہے حکومت کی توجہ

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی حکومت نے سال 2019-20 کےلئے 60ہزار کروڑ کا مجاوز بجٹ آج دہلی اسمبلی کے ایوان میں پیش کر دیا ہے۔ دہلی کے نائب وزیر اعلی اور وزیر خزانہ منیش سسودیا نے آج یہ بجٹ ایوان کے سامنے پیش کیا۔ جس میں کوئی نیا ٹیکس دہلی والوں پر نہیں لگایا گیا ہے۔ یہ بجٹ عام آدمی پارٹی کی دہلی حکومت کے دور اقتدار کا آخری اور مسلسل پانچواں بجٹ ہے جو آج وزیر خزانہ نے ایوان میں پیش کیا۔ اس سے قبل ایوان کی کاروائی شروع ہوتے ہی ہندوستانی ہوائی فوج کے ذریعہ دہشت گردوں کے ٹھانکوں پر کی گئی بم باری کی کاروائی پر فضائی فوج کو کھڑے ہو کر مبارک باد پیش کی گئی۔

اس کے بعد وزیر خزانہ منیش سسودیا نے ایوان کے سامنے بجٹ پیش کیا۔ جو سال 2018-19 کے 53ہزار کروڑ رو پے کے اندازی بجٹ سے 13.21 فیصد زیادہ ہے اور 50.200 کروڑ کے ترمیمی بجٹ سے 19.52 فیصد زیادہ ہے۔ وزیر خزانہ نے بتای اکہ دہلی کا بجٹ گزشتہ برسوں کے مقابلے بڑھ کر دو گنا 60ہزار کروڑ ہو گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2019-20 کے 60 ہزار کروڑ روپے کے بجٹ میں پلان، پروگراموں اور منصوبوں کےلئے 27ہزار کروڑ رو پے، تنصیب بجٹ 33 ہزار کروڑ روپے، آمدنی بجٹ 44,781 کروڑ اور کپیٹل ہیڈ بجٹ 15,219کروڑ ہے۔ ایوان میں پیش کئے گئے بجٹ میں دہلی کی معیشت، تعلیم، صحت، سماجی تحفظ اور فلاح و بہبود، رہائشی اور شہری ترقی، پانی کی فراہمی اور حفظان صحت، سڑک کے بنیادی ڈھانچے، نقل وحمل، سیاحت اور زراعت و دیہی ترقی پر خاص توجہ دی گئی ہے۔

نائب وزیر اعلی اور وزیر خزانہ منیش سسودیا نے کہا کہ تعلیم کےلئے 15,601 بجٹ مجاوز ہے جو گزشتہ سے 26فیصد زیادہ ہے۔ دہلی کی معیشت 8.92 فیصد زیادہ رہی ہے۔ صحت میں 7485کروڑ بجٹ مجاوز ہے۔ اسپتالوں میں دس ہزار بستروں سے بڑھا کر بیس ہزار کیا جا رہا ہے۔ فرسٹ ریسپونڈر وہیکل آن موٹر سائکل خدمات شروع کی گئی ہے۔ اس میں 6462 کروڑ ریونیو بجٹ اور 1023 کروڑ منصوبہ بجٹ شامل ہے۔ سماجی تحفظ اور فلاح و بہبود کےلئے بزرگ اور خاص ضرورت والے اور مصیبت زدہ خواتین کی مالی مدد کےلئے 2214 کروڑ کی رقم مقرر کی گئی ہے۔ رہائشی اور شہری ترقی کےلئے 1600 کروڑ کی رقم مجاوز کی گئی ہے۔ پانی کی فراہمی اور حفظان صحت کےلئے 100 کروڑ کا بجٹ مجاوز ہے۔ سڑک کے بنیادی ڈھانچے کو درست کرنے کےلئے کئی منصوبے ہیں جس کےلئے پی ڈبلیو ڈی کے ذریعہ 308کروڑ رو پے کی لاگت سے چھ مرحلوں میں اسٹریٹ کیپنگ کا کام کیا جائے گا، چھ فٹ اوور برج کی تعمیر ہو گی۔ دہلی کی ہر اسمبلی حلقہ میں 200 سی سی ٹی وی کیمروں کو لگانے کےلئے 500 کروڑ روپے بجٹ میں مجاوز ہیں۔ ٹرانسپورٹ کے میدان میں بس شیلٹروں کی تعمیر، چار ہزار نئی بسیں لانے، بسوں میں جی پی ایس لگانے، سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کا کام جاری ہے۔ میٹرو کے چوتھے فیز کی اجازت مل گئی ہے، جس کےلئے 500کروڑ بجٹ میں تجویز ہے، سیاحت میں بہتری لانے کےلئے اور دہلی میں داخلے کی تزین کاری کے لئے پانچ مقامات کی تزین کاری کی جائے گی۔ اسی طرح سگنیچر برج کو سیاحتی مقام بنانے کےلئے اس کے آس پاس تزین کاری کی جائےگی۔

زراعت اور گاؤں کی ترقی پر وزیر اعلی نے کہا کہ کسانوں کی فصل کے دام ایم ایم پی کر نے والی دہلی دنیا کی پہلی ریاست ہو گی، جس کے تحت کسانوں کو فصلوں کی لاگت کا ڈیڑھ گنا ایم ایس پی دیا جائے گا جبکہ فصلوں کے نقصان کی ادائیگی کےلئے ان کی مدد کے طور پر دی جانے والی رقم کےلئے 100کڑور روپے بجٹ میں تجویز کئے گئے ہیں۔ ماحولیات پر وزیر موصوف نے کہا کہ دہلی کو فضاء کو بہتر بنانے کےلئے جہاں بدر پور پاور پلانٹ بند کر دیا گیا ہے وہیں کئی دیگر کام کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیڑ کاٹے جانے کی صورت میں ایک درخت کے بدلے دس پودھے لگانے کے ساتھ اب کاٹے جا نے والے درختوں کی ضرورت میں محض 20فیصد پیڑوں کو ہی کاٹا جا سکے گا، 80 فیصد پیڑوں کو ٹرانسپلانٹ کرنا ہوگا، لیکن اس میں ہر پیڑ کے بدلے دس پودھے لگانے ہوں گے۔ اس کے علاوہ زمینی پانی کو بہتر بنانے کے لئے 100 کروڑ روپے، دوارکا میں 50 میگا واٹ پلانٹ بنائے جائیں گے، 345 غیر مجاز کالونیوں میں پانی اور سیور کی سہولت فراہم کی جائے گی، جمنا کی بحالی کےلئے 75 کروڑ روپے کی فراہمی کی گئی ہے، روڈ اور انفراسٹرکچر کی ترقی میں مختلف سڑکوں کی تعمیر، جل بورڈ کےلئے 2370 کروڑ روپے، فٹ اوور برج کےلئے 2940 کروڑ روپے کا بجٹ، بس ٹرمنلوں کےلئے 150 کروڑ، برقی گاڑیاں فروغ اور عوامی نقل و حمل پر 1807 کروڑ، سیاحت کے لئے 49 کروڑ روپے کا بجٹ مجاوز ہے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close