تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی تشدد: فساد متاثرین کی امداد کیلئے آگے آیا دہلی وقف بورڈ

چیئرمین امانت اللہ خان کی ہدایت پر فساد متاثرین کو راشن کٹ کی تقسیم، زخمیوں کا علاج بھی کرایا جائے گا: وقف بورڈ

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
بے سہار اور ضرورت مندوں کی امداد کیلئے پیش پیش دہلی وقف بورڈ نے راجدھانی دہلی کے مختلف علاقوں میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات کے بے یارو مدد گار ضرورت مند متاثرین کی امداد کیلئے ہاتھ بڑھایا ہے۔ دہلی وقف بورڈ کے چیئر مین امانت اللہ خان کی جانب سے دہلی وقف بورڈ کی جانب سے فساد متاثرین کو کھانے کی کٹ فراہم کرانے اور فساد متاثرین کے علاج کی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ جس پر عمل شروع ہو گیا ہے۔

واضح رہے کہ اتوار کے روز بی جے پی لیڈر کپل مشار کے اشتعال انگیز تقریر کے بعد بھڑکے فرقہ وارانہ فسادات کی آگ میں جھلس رہی ہے۔ جس میں 35 افراد سے زائد کی موت اور 200 سے زائد افراد گولی لگنے اور حملوں میں زخمی ہیں، جو اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ وہیں ہزاروں افراد کے گھر نذر آتش کر دیئے گئے ہیں، فساد متاثرین اپنا گھر بار چھوڑ کر یا تو منتقل ہوگئے ہیں یا مدد کے منتظر ہیں۔ ان کا سب کچھ فساد کی نذر ہو گیا اور ان کے پاس نہ کھانے کو ہے نہ سر چھپانے کو ٹھکانہ ہے۔ ایسے فساد متاثرین کی امداد کیلئے دہلی وقف بورڈ نے اپنا ہاتھ آگے بڑھایا ہے۔

دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے وقف بورڈ کے افسران کو فساد متاثرین کو ہرممکن مدد مہیا کرانے کی ہدایت دی ہے۔ بورڈ کے ممبر ایڈوکیٹ حمال اختر نے بتایا کہ بورڈ نے طے کیا ہے کہ سب سے پہلے متاثرین تک فوڈ پیکٹ اور ضروری راحت اشیاء پہنچائی جائیں۔ جس کے بعد انھیں دال آٹا، چاول، تیل اور دیگر اشیائے خوردنی پر مشتمل راشن کٹ کی تقسیم کی جائے گی۔ وقف بورڈ کی جانب سے راحت رسانی کا کام بورڈ کے ممبر حمال اختر کی نگرانی میں انجام دیا جا رہا ہے۔ اس کیلئے متاثرہ علاقوں میں راحت کیمپ لگائے جائیں گے، جہاں دواؤں سے لیکر راشن کٹ کی تقسیم تک ہر ممکن راحت متاثرین کو پہنچائی جائے گی۔ اسی کے ساتھ ضرورتمندوں کے لئے بستروں کا انتظام بھی کیا گیا ہے۔

ایڈوکیٹ حمال اختر نے کہا کہ دہلی کو ایک منصوبہ بند سازش کے تحت فساد کی آگ میں جھونکا گیا ہے۔ جس میں درجنوں بے گناہ اور معصوموں کی جان گئی ہے جبکہ سینکڑوں زخمی ہیں اور ہزاروں متاثرین بے گھر ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے خصوصی ہدایت دیتے ہوئے کہا ہے کہ فساد میں جتنے بھی زخمی ہوئے ہیں اور ان کو فوری طور پر علاج کی ضرورت ہے ان سب کا بلا تفریق مذہب دہلی وقف بورڈ کے خرچ پر علاج کرایا جائے اور جو بھی متاثر اپنی مدد کے لئے دہلی وقف بورڈ سے رجوع کرے اس کی ترجیحی بنیاد پر مدد کی جائے۔

ایڈوکیٹ حمال اختر نے کہا کہ فساد کی آگ نے سب کو متاثر کیا ہے، جس میں ہندو بھی ہیں اور مسلمان بھی ایسے میں ہمارا مقصد سب سے پہلے متاثرین تک ہر ممکن راحت پہنچانے کا ہے تاکہ لٹے پٹے اور بے سہارا لوگوں کے درد کو کم کیا جاسکے۔ حمال اختر نے کہا کہ ایسے میں دہلی وقف بورڈ بلا تفریق مذہب سب متاثرین کی مدد کرے گا۔ انہوں نے بتایا کہ بچوں کیلئے دودھ بسکٹ دوا اور دیگر ضروری اشیاء کا انتظام کیا گیا ہے۔ ساتھ ہی راحت کیمپوں میں کھانا بنوا کر بھی ضرورتمندوں میں تقسیم کیا جائے گا، دواؤں پر مشتمل ایک میڈیکل کٹ بھی تیار کی گئی ہے۔ وقف بورڈ کے عملہ پر مشتمل کئی ٹیمیں بنا دی گئیں ہیں، آج شام ہی سے متاثرہ علاقوں میں کیمپ لگا کر لوگوں کی راحت رسانی کا کام شروع کردیا جائے گا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close