اپنا دیشتازہ ترین خبریں

دفعہ 370 ہٹا تو جموں وکشمیر کا بھارت سے رشتہ بھی ختم ہو جائے گا: محبوبہ مفتی

پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا کہ دفعہ 370 ہٹایا گیا تو جموں وکشمیر کا بھارت سے رشتہ خود بہ خود ختم ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی آئین کا یہ دفعہ جموں وکشمیر اور بھارت کے درمیان پُل کا کام کرتا ہے۔ محبوبہ مفتی ہفتہ کے روز یہاں اپنی رہائش گاہ پر این سی لیڈر محمد عبداللہ وانی اور عوامی انصاف پارٹی کے سربراہ غلام احمد شیخ (سالورہ) کی پی ڈی پی میں شمولیت کے سلسلے میں منعقدہ تقریب سے خطاب کررہی تھیں۔

انہوں نے مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی کے ایک بیان کہ ‘جموں کشمیر میں غربت کی سب سے بڑی وجہ دفعہ 35 اے اور دفعہ 370 ہیں’، کے ردعمل میں انہوں نے کہا ‘آپ نے ہمیں ہندوستان کے آئین کے تحت کوئی پوزیشن دی ہے، اگر آپ آج اس پوزیشن کو ختم کرتے ہیں تو ہمیں دوبارہ سوچنا پڑے گا کہ کیا ہم آپ کے ساتھ رہنا چاہیں گے۔ ارون جیٹلی صاحب کو یہ بات سمجھنی چاہیے۔ اس پر غور کرنا چاہیے۔ دفعہ 370 کو ختم کرنا کوئی آسان معاملہ نہیں۔ دفعہ 370 کو ختم کریں گے تو آپ کا جموں وکشمیر کے ساتھ رشتہ ختم ہوگا’۔

محترمہ مفتی نے کہا کہ دفعہ 370 جموں وکشمیر اور بھارت کے درمیان پُل کا کام کرتا ہے۔ انہوں نے کہا ‘جموں وکشمیر میں جو مین اسٹریم جماعتیں ہیں ان کو پتہ لگانا پڑے گا کہ ہم اگر الیکشن لڑیں گے تو کس قانون کے تحت ہم ہندوستان کا الیکشن لڑیں گے۔ کیونکہ ہندوستان کا آئین ہمارے جموں وکشمیر میں دفعہ 370 کے ذریعے نافذ ہوتا ہے۔ دفعہ 370 جموں وکشمیر اور ہندوستان کے درمیان پُل کا کام کرتا ہے۔ اگر آپ اسی پُل کو توڑیں گے تو محبوبہ مفتی جو جموں وکشمیر کے آئین کی قسمیں کھاتی ہیں ، ہندوستان کے آئین کی قسم کھاتی ہے اور حلف اٹھاتی ہیں تو پھر ہم حلف کیسے اٹھائیں گے’۔

ان کا مزید کہنا تھا ‘پھر آپ کو دوبارہ جموں وکشمیر اور ہندوستان کا رشتہ بنانا پڑے گا۔ وہ کن بنیادوں اور شرطوں پر بنے گا؟ پھر نئی شرطیں ہوں گی۔ پھر سے مذاکرات ہوں گے۔ کیا آپ اس کے لئے تیار ہیں۔ پھر ہم (بھارت سے) ملنا بھی چاہیں گے یا نہ ملنا بھی چاہیں گے’۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close