اپنا دیشتازہ ترین خبریں

حکومتوں کی دلچسپی لوگوں کی صحت نہیں بلکہ انتخابات میں ہے: سپریم کورٹ

دہلی میں آلودگی پر سپریم کورٹ نے پیر کو تشویش کا اظہار کیا ہے۔ سپریم کورٹ نے کہاکہ ہر سال دہلی جام ہو جاتی ہے اور ہم کچھ نہیں کر پا رہے ہیں۔ لوگوں کو جینے کا حق ہے، ایک پرالی جلاتا ہے اور دوسرے کے جینے کے حق کی خلاف ورزی کرتا ہے۔ مرکز اور دہلی حکومت ایک دوسرے پر الزام لگا رہے ہیں، اب مرکز کرے یا پھر دہلی حکومت ہمیں اس سے مطلب نہیں۔ ساتھ ہی عدالت نے کہاکہ کیا بچے، کیا بوڑھے اور کیا ہی نوجوان سب بیمار ہو رہے ہیں۔ آخر کسان پرالی کیوں جلاتے ہیں؟ جرمانہ بھی طے کیا گیا ہے تو پھر کس طرح پرالی جلائی جا رہی ہے؟ حکومتیں کیا کر رہی ہیں؟

ساتھ ہی عدالت نے کہاکہ ہم قیمتی زندگی کھوتے جا رہے ہیں۔ ہم ہمیشہ حکم جاری کرتے ہیں، ایسے ماحول میں کوئی کس طرح گزر بسرکرے گا۔ ہمیں اس معاملے پر طویل وقت تک چلنے والے اقدامات اپنانے ہوں گے۔ پنجاب ہریانہ وغیرہ میں پرالی جلانے کی وجہ کیا ہیں؟ اگر پرالی جلانے پر روک ہے تو دونوں حکومتیں (مرکز اور ریاستی حکومت) بھی ذمہ دار ہیں۔ گرام پنچایت، سرپنچ کیا کر رہے ہیں؟ ہمیں جاننا ہے کہ پنجاب اور ہریانہ میں کون پرالی جلا رہے ہیں؟ ہم ایسے ہی بیٹھے نہیں رہ سکتے۔ ہمیں سخت قدم اٹھانے ہوں گے، گرام سرپنچوں کو جانکاری ہو گی۔

اس کے علاوہ کورٹ نے کہاکہ پرالی جلانے سے روکنا ہوگا۔ آگے کوئی بھی خلاف ورزی ہوئی تو ہم انتظامیہ پر نیچے سے اوپر تک شکنجہ کسیں گے۔ لوگ مر رہے ہیں، مہذب ملک میں ایسا نہیں ہو سکتا۔ اس ملک میں دکھ کی بات ہے، لوگ صرف نوٹنکی میں دلچسپی رکھتے ہیں، ایسا ہر سال ہو رہا ہے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ آدھے گھنٹے میں کوئی ماہر کورٹ آ سکتا ہے؟ جن سے ہم تجویز مانگ سکیں۔ ہم مصنوعی بارش وغیرہ کے بارے میں جانکاری مانگیں گے، لوگ روزانہ مر رہے ہیں، مرتے رہیں گے، کسی مہذب ملک میں ایسا نہیں ہوتا۔

عدالت نے کہاکہ اس کے لئے ریاستی حکومتیں ذمہ دار ہیں۔ لوگوں کو اس طرح مرنے کے لئے نہیں چھوڑا جا سکتا۔ یہ حیران کر دینے والا ہے۔ آپ لوگوں نے سب چیزوں کا مذاق بنا دیا، پرالی جلانا روکنا ہوگا۔ ریاستی حکومتوں کو انتخابات میں زیادہ دلچسپی ہے۔ ہم اسے برداشت نہیں کریں گے، سپریم کورٹ نے وزارت سے بھی ایک افسر کو بلانے کو کہا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close