آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

حقوق کی حفاظت کے لئے سبھی ضروری اقدامات کریں گے: چین

چین نے کہا ہے کہ امریکہ اگر ایشیا بحرالکاہل خطے میں سطح سے سطح تک مار کرنے کی صلاحیت والی درمیانی دوری کی میزائل تعینات کرتا ہے تو وہ اپنے سلامتی حقوق کی حفاظت کرنے کے لئے سبھی ضروری قدم اٹھائے گا۔

چین کے وزارت خارجہ نے منگل کو ایک بیان جاری کرکے کہا،“اگر چین کے حقوق کو نقصان پہنچے گا تو وہ خاموش نہیں بیٹھے گا۔ ہم اپنے دروازے کے نزدیک کسی بھی ملک کو امن میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے اور اہم اپنی سلامتی کے حقوق کی حفاظت کرنے کے لئے پرعزم ہیں اور اس کے لئے ہر ممکن قدم اٹھائیں گے۔”

امریکہ کے دفاعی سکریٹری مارک اسپر نے درمیانی دوری تک مار کرنے کی صلاحیت والے جوہری قوت معاہدے (آئی این ایف)کے باضابطہ طورپر دو اگست کو ختم ہوجانے کے دوسرے دن کہا تھا کہ وہ جلد از جلد ایشیا بحرالکاہل خطے میں غیر جوہری میڈیم رینج میزائل تعینات کرنا چاہتے ہیں۔ وزیردفاع ‘پینٹاگن’نے اتوار کو ایک بیان جاری کرکے کہا کہ“امریکہ اور آسٹریلیا نے ہتھیاروں کو قابو کرنے کے مسئلے کے سلسلے میں ‘نئے دور’ کی ضرورت کا اعلان کیا ہے۔ چین اور روس کو اس مسئلے پر بات کرنے کے لئے آگے آناچاہئے۔”

امریکہ نے روس پر معاہدے کی خلاف ورزی کرنے کا الزام لگاتے ہوئے اس سال فروری میں معاہدے کے فرائض سے خود کو باضابطہ طورپر آزاد کرلیاتھا اور دو اگست کو وہ اس معاہدے سے الگ ہوگیا۔ روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے بھی امریکہ کے اس قدم پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اس سال جولائی میں ملک کو معاہدے کے فرائض سے آزاد ہونے کی اجازت فراہم کرنے والے دستاویز پر دستخط کردیئے تھے۔ یہ معاہدہ سال 1987میں اس وقت سوویت یونین کے صدر میخائیل گورباچوف اور امریکی صدر رونالڈ ریگن کے درمیان ہوا تھا جو روایتی اور نیوکلیائی دونوں ہی طرح کی درمیانی دوری کی میزائلوں کے استعمال کو محدود کرتا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close