اپنا دیشتازہ ترین خبریں

‘جے اینڈ کے بینک’ کے خلاف سازشیں نئی نہیں ہیں: فاروق عبداللہ

نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے انکشاف کیا کہ ‘جے اینڈ کے بینک’ کے خلاف سازشیں بہت پہلے سے جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب وہ ریاست کے وزیر اعلیٰ تھے تو اس وقت کی مرکزی حکومت نے یہ کہتے ہوئے ‘جے اینڈ کے بینک’ کو ختم کرنے کی بات کی تھی کہ اس کی کارکردگی اچھی نہیں ہے۔

فاروق عبداللہ بدھ کے روز یہاں شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز (سکمز) کے یوم تاسیس کی تقریب کے حاشئے پر نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔ انہوں نے کہا ‘میرا ماننا ہے کہ بینک کے خلاف سازشیں نئی نہیں ہیں۔ جب میں ریاست کا وزیر اعلیٰ تھا تب بھی جے اینڈ کے بینک کی کارکردگی مثالی تھی۔ مجھے یاد ہے کہ جب میں دلی میں وزیر داخلہ کے دفتر گیا تو وہاں وزیر داخلہ ایڈوانی جی (ایل کے ایڈوانی) اور پلاننگ کمیشن کے ڈپٹی چیئرمین پنتھ جی ( کے سی پنتھ) بیٹھے ہوئے تھے۔ انہوں نے تب مجھ سے کہا کہ جے اینڈ کے بینک اچھا نہیں ہے۔ اس کی کوئی کارکردگی نہیں اور اس کو ختم کیا جانا چاہیے’۔

انہوں نے کہا ‘خوش قسمتی سے ممبئی سے شائع ہونے والے بزنس سٹینڈرڈ نے اس بینک پر ایک تفصیلی رپورٹ شائع کی ۔ اس رپورٹ میں بینک کی کارکردگی کا خلاصہ پیش کیا گیا۔ میں نے وہ رپورٹ مرکزی حکومت کو بھیجی ، پھر پنتھ جی نے فون پر مجھ سے بات کی اور کہا کہ میری معلومات غلط تھیں’۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close