اپنا دیشتازہ ترین خبریں

جیٹ ایئر ویز کے ملازمین کو تنخواہ دینے کی اپیل

مالی تنگ دستی کا سامنا کر رہی ایئرویز کمپنی جیٹ ایئرویز کے ملازمین کے سامنے روزی روٹی کا بحران پیدا ہو گیا ہے، جس کی وجہ سے ممبئی کے ایک سینئر ٹیکنیشن نے کل دوپہر میں اپنے گھر کی چھت سے چھلانگ لگا کر خودکشی کر لی ہے. جیٹ ایئرویز کے ملازمین وزیراعظم نریندر مودی سے اپنی کمپنی بچانے کی اپیل کر رہے ہیں.

بتا دیں کہ ملک کی مختلف ہوابازی کمپنیوں کے پائلٹوں کی تنظیم نیشنل ایوی ایشن گلڈ (این اےجي) نے وزیراعظم نریندر مودی سے جیٹ ایئر ویز معاملے میں مداخلت کرنے اور سرکاری زمرے کے سب سے بڑے بینک، اسٹیٹ بینک آف انڈیا (ایس بی آئی) سے کمپنی کے ملازمین کو ایک ماہ کی تنخواہ ادا کرنے کی ہدایات دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ این اےجي کے صدر کیپٹن کرن چوپڑا نے ہفتہ کی دیر رات اس سلسلے میں وزیراعظم مودی کو خط لکھا اور درخواست کی کہ وہ ایس بی آئی کو کہیں کہ بینک جیٹ کے سبھی ملازمین کے ایک ماہ کی تنخواہ ادا کرے۔ خط میں انسانی بنیاد پر یہ قدم اٹھانے کی درخواست کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ 2012 میں بند ہوئی ہوابازی کمپنی كنگ فشر کے وقت جیسی غیر انسانی صورتحال دوبارہ پیدا نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ 2012 میں جب کنگ فشر بند ہوئی تھی تو اس وقت اس کے ہزاروں ملازمین کے سامنے روزی روٹی کا بحران پیدا ہو گیا تھا اور اس غیر انسانی المیہ کے درمیان کمپنی کی بند ہونے پر ملازمین کی آٹھ ماہ کی تنخواہ بھی ڈوب گئی تھی۔

این اےجي نے یہ بھی اپیل کی ہے کہ ہوابازی کمپنی کے سلسلے میں صورتحال جب تک پوری طرح واضح نہیں ہو جاتی ہے تب تک ملک بھر کے ہوائی اڈوں پر جیٹ ایئر ویز کے سبھی سلاٹ کو جوں کاتوں برقرار رکھنا چاہئے۔ تنظیم نے تین ماہ بعد سلاٹوں کو دوسری کمپنیوں کو الاٹ کئے جانے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close