بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

جھارکھنڈ اسمبلی انتخابات: دوسرے مرحلہ کی پولنگ ختم، 62.40 فیصد پڑے ووٹ

جھارکھنڈ میں دوسرے مرحلہ کی 20 اسمبلی سیٹوں میں سے اٹھارہ پر آج سہ پہر تین بجے پولنگ ختم ہوگئی جبکہ جمشید پور مشرق اور جمشید پور مغرب میں شام پانچ بجے تک ووٹ ڈالے گئے اور اس دوران سبھی سیٹوں کےلیے کل 62.40 فیصد ووٹرز نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔

ریاستی دفتر کے ذرائع نے یہاں بتایاکہ ان بیس سیٹوں پر سخت حفاظتی بندوبست کے بیچ آج صبح سات بجے پولنگ شروع ہوئی۔ سہ پہر تین بجے تک ان اسمبلی حلقوں میں کل 62.40 فیصد ووٹرز نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا ہے۔ دوسرے مرحلہ کی 20 سیٹوں میں سے اٹھارہ کے لیے پولنگ ختم ہوگئی ہے جبکہ جمشید پور مشرق اور جمشید پور مغرب میں شام پانچ بجے تک ووٹ ڈالے گئے۔ سہ پہر تین تک جمشید پور مشرق میں 46 اعشاریہ 41 فیصد اور جمشید پورمغرب میں 43 اعشاریہ 22 فیصدووٹرز نے ووٹ ڈالے۔

پولنگ ختم ہونے پر بہراگوڑا میں 66 اعشاریہ 38فیصد،گھاٹ شلا(ریزرو)میں 64 اعشاریہ 47فیصد،پوٹکا (ریزرو)میں 61 فیصد،جگسلائی (ریزرو)میں 59 فیصد، سرائے کیلا (ریزرو) میں 56 اعشاریہ 77 فیصد، چائی باسا (ریزرو) میں 62 اعشاریہ 28 فیصد، مجھگاؤں میں 66 اعشاریہ 67 فیصد، جگناتھ پور(ریزرو) میں 60 اعشاریہ 99 فیصد، منوہرپور (ریزرو) میں 60 اعشاریہ 03 فیصد، چکردھرپور (ریزرو) میں 62 اعشاریہ 72 فیصد، کھرساواں (ریزرو) میں 60 اعشاریہ 12 فیصد، تماڑ (ریزرو) میں 67 اعشاریہ 83 فیصد، تورپا (ریزرو) میں 59 اعشاریہ 11 فیصد، کھونٹی (ریزرو) میں 59 اعشاریہ 2 فیصد، مانڈر (ریزرو) میں 61 اعشاریہ 14فیصد، سمڈیگا (ریزرو) میں 59 اعشاریہ 07 فیصداور کولیبیرا میں 56 اعشاریہ 5 فیصد پولنگ ہوئی۔

جمشیدپور مشرق اور جمشید پور مغرب کے پولنگ مراکز پر اب بھی ووٹروں کی طویل قطاریں دیکھی جاسکتی ہیں۔ ووٹروں میں خواتین کی تعداد بھی اچھی خاصی ہے۔ اس دوران گملا ضلع کے سسئی اسمبلی حلقہ میں کدرا پنچایت کے بگھنی گاؤں میں پولنگ سنٹر نمبر 36 پر آج سلامتی دستہ کے جوانوں اور گاؤں والوں کے درمیان ہوئی جھڑپ میں ایک شخص کی موت ہوگئی اور کئی جوانوں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ اس کے علاوہ ریاست میں کہیں سے کسی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے۔

واضح رہے کہ دوسرے مرحلہ کی 20 سیٹوں کے انتخابی مقابلہ میں 260 امیدوار ہیں۔ سب سے زیادہ 20،20 امیدوار جمشید پور مشرق اور جمشید پور مغرب سیٹ سے جبکہ سب سے کم سات امیدوار سرائے کیلا سیٹ سے میدان میں ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close