اپنا دیشتازہ ترین خبریں

جموں و کشمیر: محکمہ بجلی کےعارضی ملازمین کا دھرنامسلسل 25 ویں روز بھی جاری

جموں و کشمیر کی سرمائی دارالحکومت جموں میں بقایا اجرتوں اور مستقل ملازمت کے مطالبات کے حق میں محکمہ بجلی کے عارضی ملازمین نے آج مسلسل 25 ویں روز بھی دھرنا دیا۔

جے اینڈ کے کیجول لیبرز یو نین پاور ڈیولپمنٹ ڈپارٹمنٹ کے بینر تلے ہفتہ کے روز سینکڑوں کی تعداد میں محکمہ بجلی کے نیڈبیسڈ اور کیجول ملازمین نے محکمہ بجلی کے چیف انجینئر دفتر جموں کے سامنے احتجاجی مظاہر ہ کرکے اپنے مطالبات کے حق میں نعرے بازی کی۔اس دوران احتجاجی ملازمین نے ’ہماری مانگیں پوری کرو، اور مودی تیرے راج میں بچے بھوکے مرتے ہیں، ہائے ہائے کرتے ہیں‘ جیسے نعرے بلند کئے۔

یونین کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ’ ہم بقایا اجرتوں کی ادائیگی اور مستقل ملازمت کے مطالبات کے حق میں گزشتہ 25 دنوں سے چیف انجینئر دفتر پی ڈی ڈی کے سامنے احتجا جی مظاہرے کررہے ہیں لیکن ریاستی حکومت ہمارے جائز مطالبات پورے کرنے میں سنجیدہ نظر نہیں آرہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہم گزشتہ کئی برسوں سے محکمہ بجلی میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں، ہمارے کچھ ساتھی کرنٹ لگنے سے جاں بحق اور کچھ معذور ہو گئے ہیں، لیکن آج تک ہماری ملازمت کو باقاعدہ نہیں بنایا گیا اور نہ ہی ہماری التوا میں پڑی تنخواہیں واگذار کی جاتی ہیں جس سے ہم فاقہ کشی کا شکار ہوگئے ہیں ‘۔

انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے صوبہ کشمیر کے اندر 7500عارضی ملازمین محکمہ پی ڈی میں تعینات تھے، 2014میں ان کی ملازمت کو باقاعدہ بنایا گیا مگر صوبہ کے عارضی ملازمین کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا گیا ہے۔ جموں صوبہ کے 3505عارضی ملازمین آج بھی احتجاجی مظاہرے کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہمارے مطالبات کوجلد از جلد پورا نہیں کیا گیا ہم احتجاج میں شدت لانے کے لئے مجبور ہوجائیں گے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close