تازہ ترین خبریںدلی نامہ

جامعہ اور شاہین باغ مظاہرین کی حوصلہ افزائی کیلئے پہنچے فلم ساز انورگ کشیپ

دہلی بھر میں CAA ،NRC اور NPR کے خلاف احتجاج جاری، جامع مسجد پر دھرنے پورے ہوئے 40 روز

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی ا ٓر کے خلاف راجدھانی دہلی سمیت ملک بھر میں احتجاجی دھرنے جاری ہیں۔ اسی کے ساتھ مسلسل دو ماہ سے جامعہ ملیہ اسلامیہ پر بھی طلبا و طالبات کا پر امن دھرنا جاری ہے۔ حالانکہ اس دھرنے کو اکھاڑ پھینکنے کی حکومت اور انتظامیہ سمیت شرپسندوں کی جانب سے بہت کوشش کی گئی، یہاں تک یہاں فائرنگ کی گئی جس میں ایک طالب علم کے ہاتھ میں گولی بھی لگی تھی۔ لیکن اس کے باوجود اس ملک کے مستقبل طلبا و طالبات بے خوف ہو کر ملک کے آئین کی حفاظت کیلئے سینہ سپر ہیں۔ ان حوصلے مند طلباء کی حمایت اور کالے قانون کے خلاف مل بھرسے مختلف شعبوں سے وابستہ دانشوران جامعہ پہنچ رہے ہیں۔

جامعہ کے طلباء کی حوصلہ افزائی کیلئے آج بالی ووڈ کے معروف فلم ساز انوراگ کشیپ بھی جامعہ پہنچے۔ اس سے قبل ساودھان انڈیا کے ہوسٹ سوشانت سنگھ اور معروف اداکارہ نفیسہ علی بھی جامعہ کے طلبا و طالبات کی ہمت افزائی کیلئے یہاں آ کر سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کی مخالفت کر چکے ہیں۔ آج جامعہ پہنچے انوراگ کشیپ نے کہاکہ یہ بہت لمبی اور دھیریہ کی لڑ ائی ہے، یہ لڑ ائی بہت لمبی جانے والی ہے۔ جو ہم سب کو ساتھ مل کر لڑنا ہے، کئی لوگ ایسے ہیں، جن سے آپ امید کرتے ہیں وہ بولیں، آپ چاہتے ہیں کہ وہ بولیں، لیکن میں آپ کو بتا دوں کہ بہت سے لوگ ایسے بھی ہیں جو خاموش رہ کر بھی آپ کے ساتھ کھڑے ہیں۔

انوراگ کشیپ نے کہاکہ وزیر داخلہ ملک کے عوام کے حفاظت کیلئے ہوتے ہیں لیکن آج وزیر داخلہ سے سب کو ڈر لگ رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ آپ ایسی حکومت سے ڈیل کر رہے ہیں جو جامعہ میں گھس جاتی اور اٹیک کرتی ہے لیکن جے این یو کے باہر کھڑی رہتی ہے۔ آپ ایسی حکومت سے ڈیل کر رہے ہیں جو گارگی کالج کے ملزمین کو 40گھنٹے میں بیل دیکر چھوڑ دیتی ہے اور ڈاکٹر کفیل کو اندر ڈال دیتی ہے، ان کو بیل بھی دیدی جاتی ہے تو بھی ان پر این ایس اے لگا کر واپس اندر ڈالتی ہے۔ انوراگ کشیپ جامعہ کے طلبا کی حوصلہ افزائی کے بعد شاہین باغ کی خاتون مظاہرین کی حمایت میں شاہین مظاہرہ گاہ بھی پہنچے اور وہاں انہوں نے بریانی پر کی جا رہی سیاست کو منہ توڑ جواب دیتے ہوئے اسٹیج پر ہی بریانی کھائی۔

شاہین باغ کی طرز پر جہاں ملک بھر میں ہر شہر میں ایک شاہین باغ تیار ہو گیا ہے وہیں راجدھانی دہلی میں بھی شاہین باغ کی طرز پر خوریجی، سیلم پور جعفرآباد، کردم پوری، مصطفی آباد، چاندباغ، وزیر آباد، نظام الدین، اندر لوک، بیری والا باغ آزاد مارکیٹ، قریش نگر، ترکمان گیٹ اور جامع مسجد سمیت مختلف مقامات پر سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کے خلاف احتجاجی دھرنا جاری ہے۔ دہلی کی شاہی جامع مسجد کی سیڑھیوں پر جامع مسجد کورڈینیشن کمیٹی کے بینر تلے جنت فاروقی اور ان کے ساتھیوں کی جانب سے صبح سے شام تک دھرنا جاری ہے۔ جسے آج 40 دن ہو گئے ہیں۔

جنت فاروقی کے ساتھ دھرنے میں شامل سہیل دانش، ضیا، تابش، جمیل اختر، حضیفہ زید کا کہنا ہے کہ یہ دھرنا بی جے پی حکومت کی پھوٹ ڈالو راج کرو کی پالیسی اور سی اے اے، این آر سی کے خلاف ہے۔ یہ دھرنا اس وقت تک جاری رہے گا جب تک سی اے اے واپس نہیں ہوتا، این پی آر کے سوالوں کے ساتھ جو چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے اسے پوری طرح واپس نہیں کیا جاتا، ساتھ ہی این آر سی سے ہٹ کر ملک کی جی ڈی پی، بے روزگاری، غریبی، قرض معافی پر بات ہو۔ انہوں نے کہاکہ جب تک کالا قانون واپس نہیں ہوتا یہ احتجاج ختم نہیں ہوگا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close