تازہ ترین خبریںدلی نامہ

تیس ہزاری کورٹ معاملہ: گولی چلانے والے پولیس جوانوں کی گرفتاری پر عبوری روک

دہلی ہائی کورٹ نے تیس ہزاری کورٹ میں گولی چلانے والے پولیس کے جوانوں کی گرفتاری پر عبوری روک لگا دی ہے۔ چیف جسٹس ڈی این پٹیل کی صدارت والی بنچ نے مرکزی حکومت، دہلی پولیس کے کمشنر، بار کونسل آف انڈیا (بی سی آئی)، تمام ضلع عدالتوں کے بار ایسوسے ایشن کو نوٹس جاری کیا ہے۔ کورٹ نے 23 دسمبر تک جواب داخل کرنے کی ہدایت دی ہے۔ اس وقت تک گولی چلانے کے ملزم پولیس اہلکاروں کی گرفتاری نہیں کی جا سکتی ہے۔

سماعت کے دوران دہلی پولیس کی جانب سے وکیل راج دیپ بیہورا نے عدالت سے کہا کہ ہم کورٹ سو سیکورٹی کا مطالبہ کر رہے ہیں کہ جب تک عدالتی تفتیش مکمل نہ ہو جائے تب تک گولی چلانے کے ملزم پولیس والوں کو گرفتار نہیں کیا جائے۔تیس ہزاری کورٹ میں وکیل پر گولی چلانے کے ملزم اے ایس آئی پون کمار اور ایک اور پولیس اہلکار نے دہلی ہائی کورٹ میں پیشگی ضمانت کی درخواست دائر کی ہے۔

دہلی کے وکیل پون کمار کو گرفتار کرنے کی مسلسل مطالبہ کر رہے ہیں۔ دو نومبر کو تیس ہزاری کورٹ میں وکلاء اور پولیس کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہوئی تھیں، اس جھڑپ میں گولی سے زخمی وکلاء کی شکایت پر قتل کی کوشش کا مقدمہ درج کیا گیا ہے، پون کمار کو معطل کر دیا گیا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close