تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

بی سی سی آئی کے نئے ’باس‘ بنیں گے گنگولی

ہندوستانی کرکٹ کے مہاراجہ کہے جانے والے بنگال ٹائیگر سورو گنگولی ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ کے نئے صدر بنیں گے۔ گنگولی کے نام کا سرکاری طور پر اعلان 23 اکتوبر کو کرکٹ بورڈ کے انتخابات کے دن کر دیا جائے گا۔ گنگولی نے ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کے صدر کے عہدے کے لئے پیر کو نامزدگی داخل کیا اور اس عہدے کے لئے ان کا بلامقابلہ منتخب کیا جانا طے ہے کیونکہ گنگولی کے خلاف صدر کے عہدے کے لئے کوئی نامزدگی نہیں ہے۔ بورڈ انتخابات کے لئے کاغذات نامزدگی بھرنے کی آج آخری تاریخ تھی۔

بی سی سی آئی انتخابات 23 اکتوبر کو ہوں گے۔ گنگولی نے آئی پی ایل کے سابق کمشنر راجیو شکلا کے ساتھ یہاں پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ گنگولی نے 400 سے زیادہ بین الاقوامی میچوں میں ہندستان کی نمائندگی کی اور وہ پانچ سال تک ہندوستان کے کپتان بھی رہے۔ موجودہ وقت میں وہ بنگال کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر ہیں اور اس عہدے پر وہ مسلسل دو بار منتخب کئے جا چکے ہیں۔ 47 سالہ گنگولی نے نامزدگی داخل کرنے کے بعد اخباری نمائندوں سے کہاکہ گزشتہ تین سالوں میں بی سی سی آئی میں جو خراب حالات تھے انہیں بہتر بنانا اور فرسٹ کلاس کرکٹروں کی پوزیشن کو بہتر کرنا ان کی سب سے بڑی ترجیح ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ یہ ہمارا فرض ہے کہ تمام طرح کی چیزیں درست طریقے سے ہوں۔ میرے لئے اگرچہ ترجیح فرسٹ کلاس کرکٹ کھلاڑیوں کو بہتر سہولیات مہیا کرانا ہوگی۔ ساتھ ہی کوشش ہوگی کہ تمام چیزیں اپنی جگہ پر رہیں۔

سابق ہندوستانی کپتان نے ساتھ ہی کہاکہ یقینی طور پر یہ بہت اچھا احساس ہے، کیونکہ وہ ملک کے لئے کھیلے اور کپتان بھی رہے۔ صدر کے عہدے کی دوڑ میں برجیش پٹیل کو پچھاڑنے کے بعد اب دادا اس عہدے کے اکیلے امیدوار رہ گئے ہیں۔ اگرچہ بی سی سی آئی کے قوانین کے مطابق لازمی کولنگ آف مدت کی وجہ سے انہیں جولائی 2020 میں عہدہ چھوڑنا ہوگا۔ گنگولی کے پاس صدر کے عہدے پر زیادہ وقت نہیں رہے گا۔ بی سی سی آئی کے نئے آئین کے مطابق کسی عہدیدار کو تین سال کی کولنگ آف مدت میں جانا پڑے گا اگر اس نے کسی ریاستی یونین یا بی سی سی آئی کی سطح پر مسلسل چھ سال پورے کر لئے ہوں۔ گنگولی بنگال کرکٹ ایسوسی ایشن کے عہدیدار ہیں جہاں وہ حال ہی میں صدر منتخب ہوئے تھے۔ ان کے پاس کولنگ آف مدت آنے تک 10 ماہ باقی ہیں۔

ملک کے سب سے زیادہ کامیاب کپتانوں میں سے ایک گنگولی نے کہاکہ بلامقابلہ منتخب کیا جانا ہی بہت بڑی ذمہ داری ہے۔ یہ عالمی کرکٹ کا سب سے بڑا ادارہ ہے اور ذمہ داری تو ہے ہی، چاہے آپ بلا مقابلہ منتخب ہوئے ہوں یا نہیں۔ ہندوستان کرکٹ کا سپر پاور ہے تو یہ چیلنج بھی بڑا ہوگا۔ گنگولی نے ساتھ ہی کہاکہ انہوں نے کبھی بھی بورڈ کے چیئرمین بننے کا خواہش ظاہر نہیں کی تھی اور ارکان کی طرف سے منتخب ہونے پر وہ اس عہدے کے لئے راضی ہوئے ہیں۔

اس دوران راجیو شکلا نے بتایاکہ انتخابات کے لئے کاغذات نامزدگی بھرنے کے لئے آج آخری تاریخ تھی۔ زیادہ تر ارکان نے آٹھ عہدوں پر ان لوگوں کو حمایت دی ہے جن کے کاغذات نامزدگی پیر کو داخل کئے گئے، اس میں گنگولی کا بھی نام ہے۔ گنگولی نے کہاکہ میں نے اس عہدے کے لئے کبھی بھی اپنی خواہش ظاہر نہیں کی تھی۔ موجودہ حالات اور لوگوں نے مجھے یہاں تک پہنچایا ہے۔ مجھے معلوم نہیں تھا کہ میں صدر بنوں گا۔ مجھے بتایا گیا کہ میں صدر ہوں اور میری ٹیم یہ رہے گی۔ مجھے ارکان نے مجبور کیا ہے۔ رکن ہی ہمیشہ کرتے ہیں۔ انہوں نے مجھے منتخب کیا تو میں نے بھی ہاں کہا۔گنگولی نے کھلاڑیوں کے انتظامیہ میں آنے کی بات پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ یہ اچھی بات ہے کہ کھلاڑی اب انتظامیہ کا حصہ ہیں۔ پہلے بھی ہوا کرتے تھے لیکن اب تعداد زیادہ ہو گئی ہے جو کھیل کے لئے اچھی بات ہے۔

سیکریٹری کے لئے بی سی سی آئی میں نو سال کا تجربہ رکھنے والے جيئش شاہ، نائب صدر کے عہدے کے لئے مہیش ورما کا نام ہے۔ جوائنٹ سکریٹری کے لئے کیرالہ سے جيئش جارج کا نام ہے جبکہ خزانچی کے لئے ارون دھومل کا نام ہے۔ اس کے علاوہ برجیش پٹیل کو آئی پی ایل چیئرمین منتخب کیا جانا طے ہے۔ جے شاہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے بیٹے ہیں جبکہ ارون دھومل بی سی سی آئی کے سابق صدر اور موجودہ مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر کے بھائی ہیں۔ سابق ہندوستانی کوچ انشومن گايكواڈ اس دوران کیرتی آزاد کو شکست دے کر بی سی سی آئی کی نو رکنی سپریم کونسل میں آئی سی سی کے مرد نمائندے منتخب کر لئے گئے جبکہ شانتا رنگا سوامي پہلے ہی بلامقابلہ خاتون آئی سی سی نمائندہ چنی جا چکی ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ تمام ایسوسی ایشنز نے یہ فیصلے متفقہ طور پر لیے ہیں جس سے یہ امیدوار بلامقابلہ منتخب کر لئے جائیں گے۔ نئے عہدیداروں کو 23 اکتوبر کو منتخب ہونے کے ساتھ منتظمین کی کمیٹی (سی او اے) کی 33 ماہ کی مدت کا اختتام ہو جائے گا جسے سپریم کورٹ نے بی سی سی آئی کو چلانے کے لئے مقرر کیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close