تازہ ترین خبریںدلی نامہ

بی جے پی کو بے نقاب کرنے کیلئے’آپ‘ نے منایا ’دوس‘

عام آدمی پارٹی غیر مجاز کالونی کے لوگوں کی ترقی کے لئے کوشاں ہے: منیش سسودیا

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
بی جے پی حکومت کو بے نقاب کر نے کیلئے دہلی میں عام آدمی پارٹی آج ’دھوکہ دوس‘ منایا۔ پارٹی کا دعوی ہے کہ بی جے پی غیر مجاز کا لو نیوں میں لوگوں کو اندراج کے نام پر دھوکہ دے رہی ہے۔ جس کا پردہ فاش ’آپ‘ نے کیا ہے۔’آپ‘نے دہلی کے تمام انتخابی حلقوں میں مظاہرے، ریلیاں اور عوامی جلسوں کا انعقاد کیا۔ بی جے پی کے خلاف احتجاج میں پارٹی کے تمام سینئر لیڈران،کابینہ کے وزراء، ممبران پارلیمنٹ، ممبران اسمبلی، کونسلر اورکا رکنان نے شرکت کی۔

دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسوڈیا نے سنگم وہار، راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے براڑی میں احتجاج کی قیادت کی، دہلی حکومت میں کابینہ کے وزیر اور آپ کے دہلی کے کنوینر گوپال رائے نے بونا، پنکج گپتا نے جنک پوری،دلیپ پانڈے نے موہن گارڈن وکاسپوری اوردیولی میں احتجاج کی قیادت سوربھ بھاردواج نے کی۔

اس موقع پر نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے کہا کہ آج اس دھوکہ دہی کے دن سے ہم بی جے پی کے جھوٹ کو بے نقاب کرتے ہوئے غیر مجاز کالونی کے لوگوں کے درمیان جا رہے ہیں۔ ہم نہیں چاہتے کہ غیر مجاز کالونی کے لوگ ایک بار پھر بی جے پی کے فریب کا شکار ہوجائیں۔ جب سے حکومت آئی ہے، عام آدمی پارٹی غیر مجاز کالونی کے لوگوں کی ترقی کے لئے کوشاں ہے۔ انہوں نے کہا کہ غیر مجاز کالونی میں لگ بھگ 6000 کروڑ روپئے کے منصوبے جاری ہیں جس میں پانی کی پائپ لائن، سیورلائنیں بچھانا، سڑک کی تعمیر اور دیگر ترقیاتی کام شامل ہیں۔ عام آدمی پارٹی غیر مجاز کالونی کے لوگوں کے ساتھ بی جے پی کے کسی بھی طرح کے فریب کو برداشت نہیں کرے گی۔

گوپال رائے نے کہا کہ بی جے پی کانگریس کے نقش قدم پر چل رہی ہے۔ پہلے کانگریس پارٹی نے اندراج کے نام پر عارضی سرٹیفکیٹ تقسیم کر غیر مجاز کالونی کے لوگوں کو دھوکہ دیا۔ اب بی جے پی بھی آن لائن رجسٹریشن کا عمل شروع کرکے یہی دھوکہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر بی جے پی واقعتا دہلی کی غیر مجاز کالونی کو مستقل بنانا چاہتی ہے تو وہ فوری طور پر اندراج کے عمل کو ٹھیک طرح سے شروع کریں اور آن لائن رجسٹریشن کا کھیل بند کردیں۔

 راجیہ سبھا کے رکن اسمبلی سنجے سنگھ نے کہا کہ بدقسمتی ہے کہ بی جے پی غیر مجاز کالونی کے لوگوں سے جھوٹ بول رہی ہے۔ 2015 میں، جب عام آدمی پارٹی برسر اقتدار آئی، ہم نے غیر مجاز کالونی کو باقاعدہ بنانے کے منشور میں اپنا وعدہ پورا کیا۔ حکومت نے ایک منصوبہ بنایا اور مرکزی حکومت کو منظوری کے لئے بھیجا۔ مرکزی حکومت چار سال سے زیادہ عرصے سے فائل پر بیٹھی ہے اور اب انتخابات سے عین قبل، انہوں نے غیر مجاز کالونی کو باقاعدہ بنانے کا اعلان کیا ہے۔ یہ پہلا موقع نہیں جب سیاسی جماعتوں نے غیر مجاز کالونی کے لوگوں کو دھوکہ دیا۔

سوربھ بھاردواج نے کہا ہمارے خیال میں بی جے پی آن لائن رجسٹریشن کے نام پر غیر مجاز کالونی کے لوگوں کو دھوکہ دے رہی ہے۔ہم یہ بھی محسوس کرتے ہیں کہ اگر بی جے پی واقعتا غیر مجاز کالونی کے لوگوں کو ان کے حقوق دینا چاہتی ہے تو وہ دسمبر تک رجسٹریشن کا عمل مکمل کریں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close