اپنا دیشتازہ ترین خبریں

بی جے پی لیڈروں کو دیئےگئے 1800کروڑ روپئے، جس کے ثبوت ہمارے پاس موجود ہیں: کانگریس

کانگریس نے آج نریندر مودی حکومت کو بھارتیہ جنتا پارٹی کی اس وقت کی قیادت کو 1800کروڑ روپے ادا کرنے کا ذکر کرنے والی مبینہ یدیو رپا ڈائری کی جانچ لوک پال سے کرانے کے لئے چیلنج کیا ہے۔

کانگریس میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک خصوصی بریفنگ میں کہا کہ میڈیا میں ایک ڈائری سامنے آئی ہے جو کرناٹک کے سابق وزیراعلی بی ایس یدیورپا کی بتائی گئی ہے۔ اس ڈائری کے ہر صفحہ پر مسٹر یدیورپا کے دستخط ہیں۔ ڈائری کے مطابق سال2007 سے 2011 کے درمیان مسٹر یدیورپا نے بی جے پی کی اعلی قیادت کو 1800کروڑ روپے کی رشوت دی ہے۔ کانگریس رہنما نے کہا کہ اس لین دین کا ذکر مسٹر یدیورپا اور سابق مرکزی وزیر اننت کمار کی گفتگو کے عام ہوئے ٹیپ میں بھی تھی۔

مسٹر سرجے والا نے کہا کہ موجودہ مرکزی حکومت کو اس ڈائری کی جانچ انکم ٹیکس محکمہ‘ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ یا کسی دیگر اہل ایجنسی سے کرانی چاہئے۔ انہوں نے سوال کیا ’کیا مودی حکومت اس ڈائری کی جانچ لوک پال سے کرائے گی۔‘ انہوں نے کہا کہ اس ڈائری میں مذکورہ رقم کی جانچ کی جانی چاہئے۔ یہ پیسہ کن لوگوں کو اور کیوں دیا گیا تھا۔ اس کی پوری تفصیل سامنے آنی چاہئے۔ ڈائری میں ججوں کو بھی 250 کروڑ روپے دینے کا بھی ذکر ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو ڈائری کے سلسلے میں سامنے آرہی خبروں پر جواب دینا چاہئے۔ مسٹر سرجے والا نے کہا کہ اس ڈائری کے سلسلے میں انکم ٹیکس نے 2017 میں مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی سے رابطہ کیا تھا لیکن کچھ نہیں ہوا۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close