تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

بی جے پی بے شرمی کے ساتھ اراکین اسمبلی کی خرید و فروخت میں شامل ہے: گوپال رائے

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی کے کنوینر گوپال رائے نے پریس کانفرنس کے دوران کہاکہ کچھ دن قبل نے بی جے پی کے ذریعہ عام آدمی پارٹی کے اراکین اسمبلی کو خریدنے کی کوشش کا انکشاف کیا تھا، اس پر وجے گوئل کا بیان آیا کہ عام آدمی پارٹی کے 7 نہیں بلکہ 14 اراکین اسمبلی ہمارے رابطہ میں ہیں۔ ان کے اس بیان سے ثابت ہوتا ہے کہ بی جے پی بے شرمی کے ساتھ اراکین کی خرید فروخت میں شامل ہے۔ انھوں نے کہاکہ پانچ سالوں میں بی جے پی کے ساتوں امیدواروں نے دہلی میں ایک بھی ترقیاتی کام نہیں کرایا۔ بی جے پی نے اپنے دو امیدواروں کو بھی بدلا مگر بی جے پی کا یہ ہتھکنڈہ بھی فیل ہوگیا۔

گوپال رائے نے کہاکہ آج دہلی میں بی جے پی چاروں طرف سے گھری ہوئی ہے اور بی جے پی کو دکھائی دے رہا ہے کہ عآپ کی جیت کی جانب بڑھ رہی ہے۔ اس لئے بی جے پی اراکین کی خرید فروخت کرکے ماحول بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔ حال ہی میں وزیرا عظم نے بنگال میں ایک جلسہ میں کہا تھا کہ ممتا جی کی پارٹی کے 4 اراکین اسمبلی ہمارے رابطہ میں ہیں۔ دراصل بی جے پی صرف اقتدار چاہتی ہے چاہے وہ نفرت پھیلا کر ہو، قتل عام کرکے ہو یا معیشت تباہ کرکے ہو۔ انھوں نے کہاکہ کرناٹک میں جب بی جے پی کو کامیابی نہیں ملی تو وہاں بھی اس نے خرید فروخت کی منڈی لگانے کی کوشش کی۔ مگر بی جے پی وہاں بھی کامیاب نہیں ہوسکی۔ انھوں نے کہاکہ گزشتہ لوک سبھا الیکشن میں بھی بی جے پی نے دہلی میں اراکین کی خرید وفروخت کی منڈی لگائی تھی جس میں مقامی لیڈر شیر سنگھ ڈاگر کا اسٹنگ بھی سامنے آیا تھا اور اس کی وجہ سے ڈاگر کو استعفیٰ دینا پڑا تھا۔

گوپال رائے نے اس تعلق سے ڈاگر کا ویڈیو بھی دکھایا۔ گوپال رائے نے میڈیا کے ذریعہ وزیراعظم سے کہاکہ دہلی میں آپ کی ریلی ہونے والی ہے، اس میں آپ دہلی کے عوام کو بتائیں کہ دہلی میں کونے کونے میں آپ کے اراکین پارلیمنٹ نے جو ترقیاتی کاموں کی بنیاد پر بورڈ لگائے ہیں، کیا آپ کو اپنے ان اراکین کے کاموں پر بھروسہ نہیں ہے۔ اگر آپ نے کام کئے ہیں تو جگہ جگہ یہ خرید فروخت کی منڈی لگائی جارہی ہے اس کے پیچھے کیا وجہ ہے۔ کیا آپ کو ہار کا ڈر ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close