بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

بہار: ویشالی میں انسانیت شرمسار، کورونا مریض کی لاش کو ادھ جلا چھوڑا، لاش کو کھا رہے تھے کتے

کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کے مابین حکومتوں کو پوری کوشش کرنی چاہئے کہ وہ عام لوگوں کو تکلیف نہ پہنچائے، لیکن کچھ افسران اور ذمہ دار عہدوں پر فائز افراد کی وجہ سے انسانیت بھی شرمندہ ہو رہی ہے۔

بتا دیں کہ ایک شخص نے ایک سنگرودھ بہار کے ویشالی ضلع میں دیگھی میں گرلز ہاسٹل میں خودکشی کر لی۔ اس کی رپورٹ میں کروناوائرس کے علامت ظاہر ہوا تھا۔ لیکن اس کے بعد انتظامیہ نے جو رویہ اپنا یا وہ حیران کردینے والا تھا ۔انتظامیہ نے لاش کو کنہہا گھاٹ پر آخری رسومات کے لئے کنہائی ملک نامی شخص کو 1500 روپئے دے کر لاش جلا دی۔ اس شخص نے لاش کو ادھ جلی حالات میں چھوڑ کر بھاگ نکالا۔ آج صبح آس پاس کے گاؤں والوں نے لاش کو کتوں کو کھاتے ہوئے دیکھا تو ان لوگوں نے اس کی جانکاری انتظامیہ اور میڈیا کو دی۔ اس کے بعد آناًفاناً پولیس کی ٹیم وہاں پہنچی۔

واضح رہے کہ یہ ایسا واقعہ ہے جس نے انسانیت کو شرمشار کر دیا ہے ضلع ویشالی میں پہلے بھی ایک اور ایسا ہی واقعہ پیش آچکا ہے۔ پچھلی بار ایک چور کو پیٹ پیٹ کر قتل کردیا گیا۔ جس کے لاش کو انتظامیہ نے پانی میں پھنکوادیا تھا ۔ اس کے بعد کتوں کے نوچ نوچ کر کھانے کا واقعہ سامنے آچکا ہے۔ مرنے والے لڑکا ویشالی ضلع کے پٹہیڈی بیلسر رامپور گائوں کا ویندرمہاتو کا بیٹا راجیش مہاتو ہے۔ جو دہلی سے یوپی کے بلیا سے آیا اور وہ پیدل حاجی پور آیا تھا اسے سنٹر میں بھرتی کرایا گیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close