بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

بہار: مولانا اسرارالحق قاسمی ہزاروں سوگواروں کی موجودگی میں سپرد خاک

کشن گنج سے کانگریس کے رکن پارلیمنٹ اورمعروف قومی و ملی رہنما مولانا اسرارالحق قاسمی کو ان کے ہزاروں سوگواروں کی موجودگی میں ان کے آبائی گاوں ٹپو کے قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا۔مولانا کادیر رات دل کا دورہ پڑنے سے ساڑھے تین بجے کشن گنج کے سرکٹ میں انتقال ہوگیا تھا۔

مولاناکی نماز جنازہ میں سیمانچل بلکہ سارے ہندوستان سے ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی جن میں ارریہ کے ایم پی سرفرازاحمد،بنگال کے وزیر غلام ربانی ،ایم ایل اے حاجی سبحان،ایم ایل اے شکیل احمدخان، سابق ایم ایل اے اَخترالایمان سمیت درجن بھر سے زائد ممبران اسمبلی وممبران پارلیمنٹ اور اعلیٰ سرکاری افسران نے شامل ہیں۔ مولانا کی نماز جنازہ ملی گرلس اسکول کے احاطے میں ادا کی گئی۔

کشن گنج سے رکن پارلیمنٹ وف سیاسی و ملی رہنمامولانا اسرارالحق قاسمی دارالعلوم دیوبند کے مجلس شوری کے رکن، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کورٹ کے ممبر تھے ۔ ان کی عمر 76 برس کی تھی اور پسماندگان میں تین بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں۔

مولاناکے بڑے داماد فیاض عالم نے بتایا کہ مولانا کل رات کسی پروگرام واپس آئے تھے اور کشن گنج کے سرکٹ ہاؤس میں ٹھہرے ہوئے تھے۔ مولانا جب رات تین بجے تہجد کی نماز کے لئے اٹھے تو انہیں درد محسوس ہوا۔ انہوں نے سیکورٹی والوں کو بلوایا اور کہا کہ مجھے ڈاکٹر کے پاس لے چلو۔جب انہیں ڈاکٹر کے پاس لے جارہا تھا انہوں نے کہا میں آللہ کے پاس جارہاہوں۔ مجھ سے کوئی غلطی ہوئی ہو تو معاف کردینا۔ مولانا یہ بھی کہا کہ سب لوگ مجھے معاف کردیں اور میرے لئے مغفرت کی دعا کریں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close