اترپردیشتازہ ترین خبریں

بابری مسجد معاملہ: پیس پارٹی داخل کرے گی فیصلے پر نظرثانی کی درخواست

این آر سی اور سی اے بی صرف ملک کے مسلمانوں کو ہراساں کرنے اور حکومت کی ناکامیوں کو چھپانے کی کوشش: ڈاکٹر ایوب

نئی دہلی(انور حسین جعفری)
بابری مسجد معاملے پر سپریم کورٹ کے فیصلے پر نظر ثا نی کیلئے پیس پارٹی سپریم کورٹ میں ریویو پٹیشن داخل کرے گی۔آج ملک کے موجود ہ صورت حال پر دہلی کے پریس کلب آ ف انڈیا میں منعقدہ پریس کا نفرنس پیس پارٹی کے قومی صدر ڈاکٹر ایوب نے کہاکہ ہم بابری مسجد کے فیصلے سے متفق نہیں ہیں، جس پر پیس پارٹی سپریم کورٹ میں نظرثانی درخواست دائر کرے گی۔

ملک کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے ڈاکٹر ایوب نے کہا کہ موجودہ دور میں مرکزی حکومت ایسے معاملات کو بڑھاوا دے رہی ہے جس سے ملک کے مسلمانوں کو پریشان کیاجا سکے۔ حکومت اپنی سماجی اور معاشرتی ناکامیوں کو چھپانے کیلئے بے بنیاد معاملات اٹھا رہی ہے لیکن پیس پارٹی بی جے پی کے اس نظریہ کے خلاف میدان میں لڑے گی۔

ڈاکٹرایوب نے کہاکہ ایک طرف حکومت ایک ملک، ایک قانون کی بات کرتی ہے اوردوسری طرف سٹیزن شپ امینڈ منٹ بل،(سی اے بی، شہریت ترمیمی بل (لانا چاہتی ہے، جو کہ مذہبی بنیادوں پر لایا جارہا ہے۔ڈاکٹر ایوب نے کہاکہ پیس پارٹی بابا صاحب اور گاندھی جی کے نظریہ کے خلاف والے اس بل کی مخالفت کرتی ہے اور پارٹی گلی سے پارلیمنٹ تک ملک بھر میں ایک تحریک اٹھا کر اس کے خلاف احتجاج کرے گی۔

ڈاکٹر ایوب نے بتایا کہ ملک کے وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ ہندو، پارسی، بدھ، سکھ، عیسائی اور جین مذہب کے شہریوں کو شہریت دی جائے گی، لیکن انہوں نے مسلمانوں کے نام پر خاموشی اختیار رکھی۔ اب سوال یہ ہے کہ کیا حکومت مسلمانوں کو ہندوستان کا شہری نہیں مانتی؟ آخر کیوں مرکزی حکومت آئین کے آرٹیکل 14 اور 15 برابری کے حق کے خلاف جا کر یہ کر نے جا رہی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close