اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ای وی ایم ہیکنگ: کپل سبل کی صفائی، ‘ذاتی حیثیت سے گیا تھا لندن’

کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کےلیڈر اور وزیرقانون روی شنکر پرساد کےان الزامات کو منگل کو پوری طرح سے بے بنیاد بتایا کہ لندن میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم ) سے متعلق پریس کانفرنس کا اہتمام کانگریس نے کیا تھا اور واضح کیا کہ وہ اس میں ذاتی حیثیت سے شامل ہوئے تھے۔

مسٹر سبل نے منگل کو یہاں صحافیوں سے کہا کہ وہ لندن ذاتی دورے پر گئے تھے اور اسی دوران ای وی ایم پر ہوئی پریس کانفرنس کے کنوینر اور انڈین جرنلسٹ ایسو سی ایشن لندن (یوروپ ) کے صدر آشیش رے نے انھیں یہ کہتے ہوئے پریس کانفرنس میں شامل ہونے کے لیے میل بھیجا تھا کہ اس پریس کانفرنس میں وہ بہت بڑا انکشاف کرنے والے ہیں۔ انھوں نے واضح کیا کہ کانگریس کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔

بتا دیں کہ مسٹر روی شنکر نے الزام لگایا تھا کہ انتخابی کمیشن آئینی ادارہ ہے اور کانگریس منظم طریقہ سے اسے بدنام کرنے میں لگی ہے۔ انھوں نے یہ بھی الزام لگایا تھا کہ لندن میں پریس کانفرنس کا انعقاد کرنے والے آشیش رے کانگریس سے منسلک ہیں اور وہ نیشنل ہیرالڈ کے لئے پیسے کا انتظام بھی کرتے ہیں۔

مسٹر سبل نے کہا کہ ای وی ایم سے جڑا معاملہ سیاسی نہیں بلکہ آزادانہ اور غیر جانبدارانہ انتخابات کا ہے۔ اس معاملہ کو کسی سیاسی پارٹی سے جوڑ کر نہیں دیکھا جانا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ اگر کوئی ای وی ایم مشینوں کو ہیک کرنے کا دعوی کرتا ہے تو اس کی جانچ ہونی چاہئے اور اس سلسلہ میں دوسرے لوگوں پر الزام نہیں لگایا جانا چاہئے۔ ہیکنگ کا دعوی کرنے والے شخص نے جو دیگر الزامات بھی لگائے ہیں انکی بھی جانچ ہونی چاہئے اور اگر اسکی بات غلط ثابت ہوتی ہے تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جانی چاہئے۔

لندن میں منعقد اسی پریس کانفرنس میں دعوی کیا گیا تھا کہ ای وی ایم مشینوں سے چھیڑ چھاڑ کی جاسکتی ہے۔ مسٹر سبل کے اس بیان پر بی جے پی نے کانگریس کو کٹہرے میں کھڑا کیا تھا جس کے بعد کانگریس نے مسٹر سبل کے اس بیان سے خود کو الگ کرلیا ہے۔

ٹیگز
اور دیکھاو

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close