اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ای وی ایم سے نہیں بلیٹ بکس سے چناؤ کرانے کا مطالبہ

نئی دہلی (پی این این)

ای وی ایم کو لیکر مختلف سیاسی جماعتیں کافی دنوں سے سوال کھڑے کر رہی ہیں۔ سیاسی جماعتیں معتربیت پر سوال اٹھاتے ہوئے اب بیلٹ پیپر سے الیکشن کرانے کا مطالبہ کر رہی ہیں۔ آج ترنمول کانگریس کے ارکان پارلیمنٹ نے بھی پارلیمنٹ احاطے میں ای وی ایم کے خلاف مظاہرہ کیا۔ ٹی ایم سی ایم پی سنسد بھوان احاطے میں مہاتمہ گاندھی کے مجسمے کے نزدیک جمع ہوئے، اس دوران ٹی ایم سی ممبران پارلیمنٹ کے ہاتھ میں پلے کارڈ تھے جن پر ای وی ایم کے بجائے بیلٹ پیپر سے چنائو کرانے سے متعلق مطالبات لکھئے ہوئے تھے۔

واضح ہو کہ گزشتہ دنوں عام آدمی پارٹی نے بھی چنائو کے دوران ای وی ایم کی گڑ بڑی کا معاملہ اٹھایا تھا ۔اسی دوران بہوجن سماج پارٹی کی سپریمومایاوتی نے بھی ای وی ایم کو لیکر سوال کھڑا کرتے ہوئے الزام لگایا کہ حال ہی میں ہوئے لوک سبھا انتخابات کے بعد مرکز میںبر سر اقتدار بی جے پی حق میں نتیجہ آیایہ ایک طرفہ چناوی نتائج ہیں جو عوامی امیدوں کے برعکس اور تصوری سے الگ ہیں۔

مایاوتی نے کہا کہ یہ بنا منصوبہ بند اورگڑبڑی کے دھاندلی کے ممکن نہیں ہے۔مایا وتی نے مطالبہ کیا کہ حالات کو دیکھتے ہوئے ای وی ایم کے بدلے دنیا کے دیگر ملکوں کی طرح بیلٹ بکس سے الیکشن کرائے جائیں۔ ایک پروگرام کے دوران مایا وتی نے کہا کہ ملک کے تمام اپوزیشنجماعتیں ای وی ایم کے بجائے بیلٹ پیپر سے چنائو کرانے پر متفق ہیں لیکن بی جے پی اور الیکشن کمیشن اس کے خلاف ہے جس سے ملک میں بے چینی ہے۔

ایک خبر رساں ایجنسی کے مطابق ایک آر ٹی آئی رپورٹ میں جانکاری ملی ہے کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین(ای وی ایم)کے خاص حصہ مانے جانے والے بیلٹیونٹ اور ڈی ٹی چیبل میموری ماڈیول مدھیہ پردیش کے کچھ اضلاع سے غائب ہیں حالانکہ آر ٹی آئی میں یہ بات واضح نہیں کی گئی ہے جن ای وی ایم میں گڑ بڑی پائی گئی ہے ان کا عام انتخابات میں استعمال ہوا یا نہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close