تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

ایوان سے واک آؤٹ کرنے والی جماعتوں نے حکومت کی مدد کی ہے

کانگریس کے سابق ایم پی راشد علوی نے کہا طلاق بل ہرگز پاس نہ ہوتا اگر ایوان سے واک آؤٹ نہ کیا جاتا

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
طلاق ثلاثہ بل کی لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں مسلسل مخالفت کرتے ہوئے بل کی مخالفت میں ووٹ کرنے والی جماعت کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق ایم پی راشد علوی نے جہاں طلاق ثلاثہ بل کو زبردستی اور چالاکی سے پاس کروایا گیا وہیں انہوں نے بتایا کہ ایوان سے واک آؤٹ کر جانے والی سیاسی پاڑیوں کو بی جے پی کی مدد گار بتایا ہے۔

کانگریس کے سابق ایم پی راشد علوی نے ا ٓج اپنی رہائش گاہ پر طلاق ثلاثہ بل کے سلسلے میں منعقدہ پریس کانفرنس میں بی جے پی حکومت پر جم کر نشانہ سادھا۔ ان کے ساتھ دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے سکریٹری محمد طیب بھی بطور خاص موجود تھے۔ راشد علوی نے الزام لگایا کہ زبردستی اور لالچ دیکر بیحد چالاکی سے بی جے پی حکومت نے طلاق ثلاثہ بل راجیہ سبھا میں پاس کرایا ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ بل راجیہ سبھا میں ہرگز پاس نہ ہوتا اگر خود کو سیکولر کہنے والی سیاسی جماعتیں خصوصاً بی ایس پی کے ارکان ایوان سے واک آؤٹ نہ کرتے۔

راشد علوی نے کہاکہ جن سیاسی جماعتوں کے ارکان جان بوجھ کر پارلیمنٹ سے غیر حاضر رہے یا ایوان میں موجود ہوتے ہوئے بھی واک آؤٹ کر گئے. انہوں نے اس بل کی مخالفت نہیں بلکہ ’ان ڈائرکٹ‘ بی جے پی حکومت کی مدد کی ہے۔ یہ لوگ پارلیمنٹ میں اس طلاق ثلاثہ بل کے مخالف بول رہے تھے اور ووٹنگ کے وقت ایوان سے واک آؤٹ کر گئے۔ مخالفت کا مطلب یہ نہیں کہ واک آؤٹ کر جائیں، انہوں نے کہا کہ ان جماعتوں کے نمائندوں خصوصاً بی ایس پی نے بی جے پی حکومت کی مدد کی ہے۔

راشد علوی نے کہاکہ طلاق ثلاثہ بل جس طرح پاس کرایا گیا ہے وہ آئین، جمہوریت کا مذاق اڑانا اور پارلیمنٹ کو ڈی گریڈ کرنے کا کام کیا گیا ہے۔ بی جے پی کہتی ہے کہ کئی ممالک میں تین طلاق پر قانون ہے، لیکن وہ جھوٹ بولتی ہے، کیوں کہ دنیا کے کسی بھی ملک میں تین سال کی سزا طلاق دینے پر نہیں ہے۔ یہ تین طلاق بل شادی کا تحفظ نہیں بلکہ مسلم خواتین کے ساتھ زیادتی ہے اور مسلم مردوں کو جیل میں بھیجنے کا کام ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ قانون ناجائز طریقے سے بنایا گیا قانون ہے۔ جب سپریم کورٹ کہہ چکا ہے کہ تین طلاق بولنے سے طلاق نہیں ہوگی، تو جو جرم ہوا ہی نہیں اس کی سزا کیسی؟۔

راشد علوی نے طلاق کے بغیر اپنی بیویوں کو چھوڑ دینے والے شوہروں کے حوالے سے کہا کہ ایک اعداد و شمار کے مطابق ملک میں 24 لاکھ افراد ایسے ہیں جنہوں نے بغیر وجہ کے اپنی بیویوں کو چھوڑا ہوا ہے۔ خود وزیراعظم نریندر مودی بھی اسی فہرست میں ہیں۔ اگر بی جے پی حکومت کو خواتین کی پرواہ ہے، ان کا خیال ہے تو وہ اس پر قانون بنائے۔ ایک سوال کے جواب میں راشد علوی نے کہاکہ کانگریس اس بل کی مخالفت میں اب بھی کھڑی ہے، جو کانگریسی پارلیمنٹ میں تھے وہ یہاں موجود نہیں ہیں، اگر ہوتے تو بل کی مخالفت میں ووٹ ضرور کرتے کیوں کہ کانگریس نے ’ویگو‘ جاری کر رکھا تھا کہ جو لوگ موجود ہوتے ہوئے بھی پارلیمنٹ نہیں پہنچیں گے ان کی رکنیت خارج کر دی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ اس بل کے خلاف لوگ سپریم کورٹ جائیں گے اور ہمیں یقین ہے کہ یہ بل سپریم کورٹ میں رک جائے گا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close