دلی نامہ

این آئی اے حکومت کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہی ہے: راشد علوی

دہلی اور یو پی سے مبینہ آئی ایس آئی ایس کے لوگوں کی گرفتاری پر راشد علوی کی تشویش:

نئی دہلی (انور حسین جعفری): این آئی اے کی جانب سے یو پی اور دہلی میں مختلف جگہوں پر چھا پے ماری میں10مسلم نو جوانوں کی گرفتاری پر کا نگریس کے سینئر لیڈر اور سابق رکن پارلیمنٹ راشد علوی نے تشویش ظا ہرکرتے ہوئے کہاکہ این آئی اے حکومت کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہی ہے۔انہوں نے کہاکہ جو کچھ امرو ہہ میں ہوا اگر وہ سچ ہے توگناہ گاروں کو سخت سزا بلکہ پھانسی کی سزا دی جائے، لیکن اگر وہ بے قصور ہیں تو ان پریشان نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ایسا لگتا ہے کہ امروہہ کو بد نام یا جا رہا ہے ۔راشد علوی آج این آئی اے کی کاروائی کے سلسلے میںصحافیوں سے بات کر رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ امرو ہہ اور سید پور امّہ گاؤں سے 50سے زیادہند ومسلم لوگ ان سے ملنے آئے تھے، انہوں نے جو واقعہ بتایا ہے وہ این آئی اے جو رپورٹ پیش کی ہے اس کے بر عکس ہے۔ راشدعلوی نے صحافیوں کو چشم دید کا نام نہ بتا تے ہوئے بتایا کہ انہیں چشم دید گاؤں والوں نے بتایا کہ 25،30 گاڑیوں میں تقریباً 200پولیس والوں نے گھیر لیا، ایک ٹرک میں سے سامان سے بھرے گتّے کے ڈبّے اتارے اور وہی سامان برامد دکھایا کہ یہ سامان برامد ہوا ہے۔ ایک بوڑھے چشم دیدنے جب اعتراض کیا تو اسے دھمکا کر خاموش کر دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ این آئی اے کو راکٹ لانچر اور ہائڈرو لک جیک میں فرق تک نہیں معلوم وہ ہائڈرولک جیک کو را کٹ لانچربتا رہے ہیں۔ گھریلو سامان بیچ کر دہشت گردی کے لئے سامان بیچے جانے کی بات پر راشد علوی نے کہا کہ دنیا ایسا کوئی دہشت گرد ہوگا جو اپنے گھر کا سامان بیچ کر لانچر بنا رہا ہوگا۔اگر وہ آئی ایس آئی ایس کے ہوتے کیا گھر مین لانچر ببناتے؟۔ انہوں نے کہاکہ مذکورہ افراد سیاست دانوں کو مارنا چا ہتے تھے تو ان سیاستدانوں کے نام عام کئے جائیں۔

راشد علوی نے کہا کہ امرو ہہ ادبی زمین ہو نے کے ساتھ انتہائی سیکولر ہے۔ 1947میں بھی وہاں امن تھا۔ اگر وہاں سےجس کو پکڑا گیا ہے اگر وہ گناہ گار ہے تو اسے سزا دی جائے لیکن اگر وہ بے گناہ ہے تو اس کو پھنسایا نہ جائے۔ انہوں نے کہاکہ خبر یہ ہے کہ ریڈ سے چار پانچ روز قبل این آئی اے کے لوگ وہاں گئے تھے اور خود کو امرو ہہ میونسپل بورڈ کا بتا کر وہاں گھروں کے نقشے بنائے، جبکہ میونسپل بورڈ نے اپنے آدمی ہو نے سے انکار کیا ہے۔ یہ تمام واقعات سے شک وشبہ کی سوئیں گھومتی ہے کہ آخر پہلے ہی گھروں کے نقشے کیوں بننا ئے گئے؟۔ ہم یہ نہیں کہتے کہ گناہ گاروں کو بخشا نہ جائے لیکن بے قصوروں کو پریشان نہ کیا جائے۔

راشد علوی نے کہاکہ سرکارکو ایسا کوئی کام نہیں کرنا چا ہئے جس سے ملک کا ماحول خراب ہو۔ انہوں نے کہا کہ کئی صوبوں میں ہوئی ہار سے حکومت ڈری ہو ئی ہے جو خوف کا ماحول پیدا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکومت اور پارٹی نفرت کی سیاست کر رہی اور ایک ایسا ماحول بنا رہی ہے کہ ہندو ووٹ ایک طرف ہو جائے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی پانچ اسٹیٹ میں مسلم تو بہت کم ہیں، یہاں بی جے پی کو ہندؤں نے ہرایا ہے، اس لئے وہ ہند و مسلم کی تفریق پیدا کرکے کٹّر ووٹ جمع کرنا چاہتی ہے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close