اپنا دیشتازہ ترین خبریں

این آرسی پر ممتا نے کی امیت شاہ سے بات

وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے آج دوپہر نئی دہلی کے نارتھ بلاک میں مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ سے ملاقات کرکے آسام میں این آر سی کا ایشو اٹھایا ہے۔

نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے کہا کہ میں نے وزیر داخلہ سے آسام میں این آر سی سے متاثر ین سے متعلق بات چیت کی ہے کہ کی حقیقی شہری بنگالی، ہندی اور گورکھا کے نام شامل نہیں ہوسکے ہیں۔ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال میں این آر سی کے نفاذ سے متعلق کوئی بات چیت نہیں ہوئی ہے۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ این آر سی میں جگہ نہیں پانے والوں میں بڑی تعداد میں ایسے افراد ہیں جو کئی سالوں سے ہندوستان میں رہتے رہے ہیں۔انہیں دوسرا موقع ملنا چاہیے۔جگہ نہیں پانے والوں میں بنگلہ بولنے والوں کی بڑی تعداد ہے۔جب کہ ہندی اور گورکھا بھی جگہ پانے میں ناکام ہوگئے ہیں۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال سے متصل سرحد کی سیکورٹی سے متعلق بھی بات چیت کی گئی ہے۔جب ممتا بنرجی سے سوال کیا گیا کہ کیا مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ سے آئی پی ایس آفیسر راجیو کمار سے متعلق بھی بات چیت ہوئی ہے۔ اس سوال کا جواب دینے سے ممتا بنرجی نے اعراض کیا۔
خیال رہے کہ سی پی ایم نے ممتا بنرجی اور امیت شاہ کی ملاقات کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ممتا بنرجی نے بنگال میں این آر سی کے نفاد سے متعلق ممتا بنرجی نے بات چیت نہیں کرکے بہت بڑی غلطی کی ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل ممتا بنرجی اور وزیرا عظم نریندر مودی کے ملاقا ت پر اپوزیشن جماعتوں نے تنقید کرکتے ہوئے کہا تھا کہ مغربی بنگال اسمبلی میں این آر سی کے خلاف کے ریزولیشن پاس کرانے والی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے وزیر اعظم سے ملاقات کے درمیان این آر سی کے ایشو کو کیوں نہیں اٹھایا۔ سوجن چکرورتی نے کہا کہ بنگالی عوام این آر سی کی وجہ سے پریشان ہیں۔بنگال پر این آر سی کی دہشت کا سایہ ہے مگر وزیرا عظم سے ملاقات کے دوران وہ ایک لفظ بھی این آر سی سے متعلق نہیں بول رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ممتا بنرجی کو وزیرا عظم کے سامنے این آر سی کے نقصانات سے متعلق آگاہ کرنا چاہیے مگر انہوں نے ایسا نہیں کیا۔

بی جے پی لیڈر مکل رائے جو ماضی میں ممتا بنرجی کے سب سے زیادہ قریبی لیڈر رہ چکے ہیں نے بھی سوال کیا کہ اگر ممتا بنرجی این آر سی کے خلاف ہیں تو پھر انہوں نے این آر سی سے متعلق وزیرا عظم سے کیوں نہیں بات چیت کی۔مکل رائے نے کہا کہ این آر سی کے نفاذ کی نہ صرف بنگا ل میں بلکہ پورے ملک میں ضرورت ہے۔اگر ممتا بنرجی اس کے خلاف ہیں تو انہیں وزیرا عظم کے سامنے کچھ کہنا چاہے۔اگر انہوں نے این آر سی پر وزیر اعظم سے بات کرنے کی ضرورت محسوس نہیں کی تو پھر بنگال میں کیوں اس پر سیاست کرتی ہیں۔

ریاستی وزیر فرہاد حکیم اپوزیشن جماعتوں کی تنقید کا حواب دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح کی ملاقاتیں عام بات ہے، اکثر وزرائے اعلیٰ اپنی ریاستوں کے مطالبات کو لے کر وزیر اعظم سے ملاقات کرتے ہیں، یہ ملاقات ریاست کے مفادات میں ہوتی ہیں۔خود ممتا بنرجی نے بھی کہا کہ اگر ریاست کی فلاح وبہبود کی ضرورت کا تقاضا ہے تو وہ ضروروزیر اعظم سے بار بار ملاقات کریں گی۔فرہاد حکیم نے کہا کہ اس پر زیادہ گفتگو کرنے کی ضرورت نہیں جتنی کی جارہی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close