اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ایل آئی سی ہولڈروں کی کمائی برباد کررہی ہے حکومت: کانگریس

کانگریس نے غیر بینکنگ مالیاتی کمپنی انفرااسٹرکچر لیزینگ اینڈ فائننشیل سروس (آئی ایل اینڈ ایف ایس) کو 91 ہزار کروڑ روپے کے قرض سے بچانے کے لئے ملک کے 38 کروڑ جیون بیمہ ہولڈروں کی کمائی کواستعمال کرنے کا حکومت پر الزام لگایا اور کہا کہ فائدے میں چلنے والی کمپنیوں کا دیوالیہ ہورہے اداروںکے لئے استعمال کرنا مودی حکومت کا طریقہ کار بن گیا ہے۔

کانگریس ترجمان پروفیسر گورو بلبھ نے سنیچر کو یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں منعقد نامہ نگاروں کی خصوصی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خسارے میں چلنے والے سرکاری اداروں کو بچانے کے لئے منافع بخش کمپنیوں کا پیسہ برباد کرنا نامناسب ہے لیکن مودی حکومت مسلسل یہ کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے گجرات اسٹیٹ پٹرولیم کارپوریشن (جے ایس پی سی) کو بچانے کے لئے تیل کے شعبے کی کمپنی او این جی سی کا استعمال کیا گیا۔ پھر پبلک سیکٹر کی کمپنی آئی ڈی بی آئی بینک کو خسارے سے بچانے کے لئے ایل آئی سی کا استعمال کیا گیا اور اب آئی ایل اینڈایف ایس کو بچانے کے لئے پھر ایل آئی سی سے ساڑھے سات ہزار کروڑ روپے کی رقم دی جارہی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ آئی ایل اینڈ ایف ایس اچانک خسارے میں نہیں آئی بلکہ وہ گزشتہ چار برسوں سے مسلسل خسارے میں چل رہی تھی اور اس دوران ہر ماہ اسے تقریبا 900 کروڑ روپے کا خسارہ ہورہا تھا۔ اس مدت میں اس کمپنی کو بچانے کے لئے کوئی کوشش نہیں کی گئی جبکہ کمپنی کے ڈائرکٹر بورڈ میں ایل آئی سی اور ایس بی آئی جیسے اداروں کے نمائندے شامل تھے۔ انہوں نے کہا کہ ایل آئی سی اور ایس بی آئی کے لوگ ڈائرکٹر بورڈ میں بیٹھ کر کیا کررہے تھے ان کے کردار کی جانچ ہونی چاہئے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close