اترپردیشتازہ ترین خبریں

ایس پی کی پونم سنہا اور کانگریس کے پرمود کرشنن نے لکھنؤ سے پرچہ نامزدگی داخل کیا

اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ پارلیمانی حلقے سے نامزدگی کے آخری دن ایس پی، بی ایس پی، آر ایل ڈی اتحاد کی امیدوار پونم سنہا اور کانگریس امیدوار پرمود کرشنن نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کر دیا ہے۔

یو پی اتحاد کے بینر تلے ایس پی کی امیدوار پونم سنہا نے اپنی طاقت کے مظاہرہ کے ساتھ ایس پی لیڈروں روی داس مہروترا اور ابھیشیک مشرا کی موجودگی میں پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ اس موقع پر ایس پی کے سینکڑوں کارکن موجود رہے۔ تاہم اس موقع پر پونم سنہا کے شوہرو کانگریس لیڈر شتروگھن سنہا بیوی کے پرچہ نامزدگی کے وقت کلکٹریٹ دفتر میں موجود نہ تھے۔

محترمہ پونم سنہا نے پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے پارٹی دفتر سے کلکٹریٹ تک میگا روڈ شو کیا۔ روڈ شو میں ایس پی ایم پی ڈمپل یادو، شتروگھن سنہا، ان کے دونوں بیٹے۔سماج وادی پارٹی کے دیگر سینئرلیڈران اور پارٹی کے سینکٹروں کارکن موجود رہے۔ روڈ شو کے دوران کارکن میں کافی جوش دیکھنے کو ملا۔ انہوں نے پونم سنہا اب کی بار کے نعرے کے ساتھ اپنے امیدوار پر جم کر پھولوں کی بارش کی۔

وہیں دوسری جانب کانگریس امیدوار پرمود کرشنن نے بھی تقریبا 800میٹر لمبے روڈ شو کے بعد اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ اس موقع پر کانگریس کارکنوں کی اچھی خاصی تعداد موجودرہی۔ آج لکھنؤ پارلیمانی حلقے سے پرچہ نامزدگی کا آخر ی دن ہے۔ اس سیٹ کے لئے پانچویں مرحلے کے تحت 06 مئی کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔کاغذات کی جانچ سنیچر کو ہوگی اور جبکہ امیدوار اپنا نام 22 اپریل تک واپس لے سکیں گے۔

پونم سنہا نے منگل کو سماج وادی پارٹی میں شمولیت اختیار کی تھی۔جبکہ ان کے شوہر شتروگھن سنہا بہار کے پٹنہ صاحب لوک سبھا سیٹ سے کانگریس کے امیدوار ہیں۔ جس پر ساتویں اور آخری مرحلے کے تحت ووٹ ڈالے جائیں گے۔مسٹر سنہا پٹنہ صاحب سے موجودہ ایم پی ہیں اور 16 اپریل کو اپنا پرچہ نامزدگی بھی داخل کردیا ہے۔ محترمہ سنہا فلمی اداکارہ اور فیشن ماڈل رہی ہیں۔ انہوں نے ہندی سنیما میں بھی کام کیا ہے۔انہیں 1968 میں ’مس یونگ انڈیا‘ کے تاج سے نوازہ گیا تھا۔ محترمہ سنہا کی آخری فلم جودھا اکبر تھی۔ ان کے تین بچے ہیں۔ سوناکشی سنہا بالی ووڈ دنیا میں ایک جانا پہچانا نام ہے جو ان کی بیٹی ہیں۔

وہیں دوسری جانب سے کانگریس امیدوار پرمود کرشنن اچاریہ سے سیاسی دنیا میں قدم رکھا ہے۔ وہ 2014 کے عام انتخابات میں یوپی کی سمبھل سیٹ سے انتخابی میدان میں تھے۔ وہاں پر انہوں نے 14000 ووٹ حاصل کرکے پانچویں مقام پر تھے۔ وہ سابق ایم پی اور یوپی کے سابق لیجسلیچر ہیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close