اپنا دیشتازہ ترین خبریں

اپوزیشن نے ’یوم آئین‘ کی تقریب کا کیا بائیکاٹ

اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس سمیت سبھی اپوزیشن پارٹیوں نے منگل کو پارلیمنٹ کے مرکزی ہال میں منعقدیوم آئین کی تقریب کا بائیکاٹ کیا اور برسر اقتدار پارٹی بی جےپی پر جمہوریت کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آئین ساز بھیم راو امبیڈکر کے مجسمے کے سامنے مظاہرہ کیا۔

آئین کو نافذ کئے جانے کے 70برس پورے ہونے کے موقع پر اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈروں نے پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں واقع آئین ساز بھیم راو امبیڈکر کے مجسمے کے پاس دس بج کر تیس منٹ پر جمع ہونا شروع کیا اور سب نے ایک آواز میں مرکزی ہال کی تقریب میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا۔ مرکزی ہال میں پروگرام کی تقریب تقریباً 11 بجے شروع ہوئی جس میں صدر رام ناتھ کووند، نائب صدر ایم وینکئیا نائیڈو، لوک سبھا اسپیکر اوم برلا، وزیراعظم نریندرمودی کے علاوہ مرکزی وزیر، ارکان پارلیمنٹ اور دیگر معزز مہمان موجود تھے۔

کانگریس کے علاوہ ترنمول کانگریس، ڈی ایم کے،شیو سینا،نیشنلسٹ کانگریس پارٹی،سماجوادی پارٹی، بہوجن سماج پارٹی،راشٹریہ جنتا پارٹی سمیت تمام اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ شامل تھے۔ ان لیڈروں میں کانگریس اسپیکر سونیا گاندھی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ، سابق صدر راہل گاندھی، ترنمول کانگریس کے کلیان بینرجی، نیشلسٹ کانگریس پارٹی کے ماجد مینن، سماجوادی پارٹی کے رام گوپال یادو، ڈی ایم کے کے اے راجہ، بہوجن سماج پارٹی کے شفیق الرحمان برق، نیشنل کانفرنس کے حسنین مسودی سمیت دیگر لیڈر شامل تھے۔ ان لیڈروں نے ہاتھون میں تختیاں اور بینر لے کر حکومت کی پالیسیوں کے خلاف مظاہرہ کیا جس پر’جمہوریت کا قتل بند کرو‘، ’آئین بچاؤ‘ وغیرہ کے نعرے لکھے ہوئے تھے

ان لیڈروں نے آئین کے تئیں الگ الگ حصوں کو پڑھکر سنایا۔ جسے وہاں موجود لوگوں نے بڑی توجہ سے سنا۔ مجسمے کی جگہ پر کافی زیادہ بھیڑ جمع ہوگئی تھی جس میں لیڈروں کے علاوہ پارلیمنٹ ہاؤس کے افسر، ملازمین اور سکیورٹی اہلکار بھی شامل تھے۔ اس سے پہلے ان لیڈروں نے 26/11 کے ممبئی حملے میں شہید جوانوں کی یاد میں کچھ دیر خاموشی اختیار کرکے انہیں خراج عقیدت پیش کیا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close