تازہ ترین خبریںدلی نامہ

آڈ-ايون ایک ڈرامہ: وجے گوئل

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رکن پارلیمنٹ اور سابق مرکزی وزیر وجے گوئل نے دہلی میں آلودگی کنٹرول کرنے کے لئے پیر سے جاری مسافر گاڑیوں کے آڈ ایون منصوبہ کے خلاف احتجاجاً اپنی طاق نمبر کی گاڑی لے کر سڑک پر نکلے۔ انہوں نے طنز کیا کہ پہلے صرف اروند کجریوال کو کھانسی آتی تھی مگر پانچ سال میں دہلی کی ایسی حالت ہو گئی ہے کہ دارالحکومت کے لوگ کھانس رہے ہیں۔

دارالحکومت میں سانس گھونٹنے والی ہوا اور بھیانک رخ اختیار کرچکی فضائی آلودگی كو کنٹرول کرنے کے لئے دہلی حکومت نے آج تیسری بار طاق جفت-آڈ ایون منصوبہ کی شروعات کی۔ آج گاڑی کے رجسٹریشن کا آخری ہندسہ جفت ہونے پر ہی اسے سڑک پر اتارا جا سکتا تھا۔ طاق نمبر کی گاڑی لے کرنکلے دہلی بی جے پی کے سابق صدر مسٹر گوئل نے اسے مسٹر کجریوال کا علامتی احتجاج بتاتے ہوئے کہاکہ گزشتہ دو بار لاگو کئے گئے منصوبہ سے کوئی فائدہ نہیں ہوا تھا۔ مسٹر گوئل اپنی سرکاری رہائش 10 اشوک روڈ سے 12 بجے آئی ٹی او کے لئے نکلے، کار میں ان کے ساتھ بی جے پی کے نائب صدر شیام جاجو بھی تھے۔

قابل ذکر ہے منصوبہ کے خلاف ورزی کرنے پر چار ہزار روپے کا جرمانہ بھی ادا کیا۔ مسٹر گوئل نے میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ اب دہلی اسمبلی کا الیکشن قریب ہے اور مسٹر کجریوال نے پانچ سال تک تو آلودگی کو کم کرنے کی سمت میں کوئی کام نہیں کیا اور اب آڈ -ایون کا ڈرامہ کر رہے ہیں۔ دہلی حکومت کے ماسک بانٹے جانے پر بھی سوال اٹھاتے ہوئے ممبر پارلیمنٹ نے کہا کہ دارالحکومت کی آبادی دو کروڑ ہے جبکہ ماسک ایک چوتھائی ہی بانٹے گئے ہیں۔

آڈ-ایون منصوبہ کو انتخابی ڈرامہ قرار دیتے ہوئے مسٹر گوئل نے اپنی گاڑی خصوصی طور پر تیارکی تھی اور’آڈ-ايون ایک ڈرامہ‘ چسپاں کیاگیاتھا۔ وزیر اعلی پر نشانہ لگاتے ہوئے مسٹر گوئل نے مسٹر کجریوال کی کھانسی پر بھی طنز کیا اور کہا کہ پہلے صرف ان کوکھانسی آتی تھی، مگر اب تو پوری دہلی کے لوگ کھانس رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ پانچ سال کی حکومت کے دوران مختلف ایشوز پر ہڑتال کی بات کرنے والے وزیر اعلی نے ایک بار بھی آلودگی کے معاملہ پر ہڑتال کیوں نہیں کی۔

انہوں نے دعوی کیاکہ گاڑیوں سے دارالحکومت کی آلودگی میں 28 فیصد حصہ ہے مگر گاڑیوں سے تو یہ صرف تین فیصد ہی ہوتی ہے۔مسٹر گوئل نے منصوبہ کےخلاف احتجاج کرنے کے لئے طاق عدد نمبر کی گاڑی ’ڈی ایل 3سی سی 2727‘ کا استعمال کیا۔ اس آگے کی نمبر پلیٹ پر’ آڈ ایون ایک ڈرامہ ہے‘ لکھوایا گیا تھا۔ گھر سے نکلنے سے پہلے گوئل نے ٹویٹ کیا’’پچھلی بار آڈايون کے نام پر عوام کی محنت کی کمائی کے 20 کروڑ روپے برباد کرنے والے کجریوال نے اس بار 35 کروڑ روپے برباد کر دیے اور آج سے پھر آڈایون لاگو کر دیا ہے۔ آڈايون محض ایک انتخابی ڈرامہ ہے‘‘۔

اسکیم کی خلاف ورزی کرنے پر آج كئی جگہ دہلی ٹریفک پولیس چالان کاٹتی نظر آئی۔ خلاف ورزی کرنے والے اپنے بچاؤ کے لئے طرح طرح کی دلیل دیتے نظر آئے مگر وہ بچ نہیں سکے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close