تازہ ترین خبریںدلی نامہ

آلودگی کا قہر: دہلی کے سبھی اسکول 5 نومبر تک بند

راجدھانی میں دم گھونٹنے والی اور مہلک فضائی آلودگی کے مدنظر سپریم کورٹ کی تشکیل کردہ ماحولیاتی آلودگی کی روک تھام اور کنٹرول سے متعلق اتھارٹی (ای پی سی اے) نے جمعہ کو دہلی، قومی راجدھانی خطہ میں پبلک ہیلتھ ایمرجنسی کا اعلان کرتے ہوئے 5 نومبر تک ہرطرح کے تعمیراتی کاموں پر روک لگادی ہے۔ دہلی حکومت نے بھی آلودگی کی وجہ سے راجدھانی کے سبھی اسکولوں کو 5 نومبر تک بندکرنے کا اعلان کیا۔

اتھارٹی نے آلودگی کے ‘انتہائی خراب’ زمرے میں پہنچنے پر پوری سردیوں کے دوران پٹاخہ جلانے پر پابندی لگادی ہے۔ای پی سی اے کے چیئرمین بھورے لال نے اترپردیش، ہریانہ اور دہلی کے چیف سکریٹریوں کو لکھے خط میں کہاکہ جمعرات کو دہلی، قومی راجدھانی خطہ میں فضائی آلودگی کی صورتحال انتہائی خراب ہوگئی اور وہ اب‘انتہائی سنگین ’حالت میں پہنچ گئی ہے۔ خط میں کہاگیا ہے،“ ہم اسے ایک پبلک ہیلتھ ایمرجنسی کی طرح لے رہے ہیں کیونکہ فضائی آلودگی کا صحت پر اور خاص طور پر بچوں کی صحت پر سنگین اثرات مرتب ہوتے ہونگے۔” ادھر دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال نے راجدھانی میں آلودگی کے سنگین شکل اختیار کرلینے کا الزام پنجاب اور ہریانہ پر لگاتے ہوئے کہاکہ دونوں حکومتیں کسانوں کو فصلوں کی باقیات جلانے پر مجبور کررہی ہیں۔

مسٹر کیجریوال نے جمعہ کو ٹویٹ کرکے کہاکہ ہریانہ کی منوہر لال کھٹر اور پنجاب کی کیپٹن امرندرسنگھ کی حکومتیں اپنے کسانوں کو فصلوں کی باقیات جلانے پر مجبور کررہی ہیں جس کی وجہ سے دہلی میں کافی زیادہ آلودگی ہے۔انھوں نے کہاکہ جمعہ کو دہلی میں واقع پنجاب اور ہریانہ بھون پر لوگوں نے مظاہرہ کرکے وہاں کی حکومتوں کے تئیں اپنی ناراضگی ظاہر کی۔

وزیراعلی نے کہاکہ پڑوسی ریاستوں میں فصلوں کی باقیات جلانے سے راجدھانی میں دھواں پھیل رہاہے اور اس سے دہلی گیس چیمبر میں تبدیل ہوگئی ہے۔اس دم گھونٹنے والی فضائی آلودگی سے ہمیں خود کو بچانا ضروری ہے۔ حکومت نے سرکاری اور پرائیویٹ اسکولوں میں آج سے 50لاکھ ماسک تقسیم کرنے کا کام شروع کیاہے۔انھوں نے دہلی کے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ ضرورت پڑنے پر ماسک کا استعمال کریں۔ انھوں نے کہاکہ یہ سب کی زندگی اور صحت کا سوال ہے۔ آلودگی کے مسئلہ پر سبھی کو فورا کچھ کرنا ہوگا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close