اپنا دیشتازہ ترین خبریں

آسا رام کے بعد بیٹا نارائن سائیں بھی ریپ کے معاملے میں مجرم قرار

عصمت دری کے الزام میں عمر قید کی سزا کاٹ رہے آسارام کے بیٹے نارائن سائیں کو بھی سورت سیشن کورٹ نے سادھوی سے ریپ کرنے کے معاملے میں قصوروار قرار دے دیا ہے۔ اس معاملہ میں عدالت نے اپنا فیصلہ محفوظ رکھتے ہوئے 30 اپریل کو نارائن سائیں کے خلاف سزا کا اعلان کرے گی.

بتا دیں کہ خبروں کے مطابق نارائن سائیں اور اس کے والد آسارام باپو پر سورت کی دو سگی بہنوں نے ریپ کا الزم لگایا تھا۔ ان میں سے بڑی بہن کا نارائن سائیں کے والد آسارام باپو کے بارے میں کہنا تھا کہ جب وہ 1997 سے 2006 تک احمدآباد میں واقع آسارام کے آشرم میں رہی تو اس دوران آسارام نے بار بار اس کو اپنی ہوس کا شکار بنایا، دوسری طرف ان میں سے چھوٹی بہن کا الزام یہ تھا کہ جب وہ 2002 سے 2005 آسارام کے سورت میں واقع آشرم میں رہ رہی تھی۔ اس دوران نارائن سائیں نے اس کی عصمت کو تار تار کیا۔

اس معاملے میں ان متاثرہ بہنوں نے ایف آئی آر درج کروائی تھی جس کے بعد سائیں کو 6دسمبر 2013 کو لاجپور سینٹرل جیل بھیجا گیا تھا۔ اس معاملے میں نارائن سائیں سمیت دس ملزم ہیں۔ ان میں نارائن سائیں کے علاوہ تمام فی الحال ضمانت پر باہر ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ ان کے والد آسا رام اس وقت جودھ پور راجستھان کی جیل میں ہیں۔ جہاں ان کو آشرم کی ایک نابالغ لڑکی سے ریپ کے معاملے میں گرفتار کیا گیا تھا جنہیں عمر قید کی سزا ہوئی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close