تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

انڈیا اسلامک کلچرل سینٹرکو مایہ ناز ادارہ بنائے گی سراج الدین قریشی اور ان کی ٹیم

سینٹر کے پانچ سالہ انتخابات میں ایگزکیٹو ممبر کے امیدوار بدرالدین خان کا عہد:

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
انڈیا اسلامک کلچر سینٹر کے پانچ سالہ انتخابات 6جنوری کو ہو نے جا رہے ہیں۔ سینٹر کے موجودہ صدر سراج الدین قریشی ایک مرتبہ پھر اپنے پینل کے ساتھ انتخابی میدان میں ہیں۔

سراج الدین قریشی تین مرتبہ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کے صدر بنے ہیں۔ اس سے قبل وہ انتخابات میں شکیل الزماں انصاری اور کا نگریس کے سینئر لیڈر سلمان خورشید کو شکست دے چکے ہیں۔ 15 جنوری 1948 کو محترم اسلام الدین کے یہاں پیدا ہوئے سراج الدین قریشی نے دہلی یو نیورسٹی سے بی اے اور بیچلر آف لاء کی ڈگری حاصل کی وہ دہلی کے تاریخی انگلو عربک اسکول اور دہلی کالج کے سابق طالب علم ہیں۔ مختلف کمیٹیوں، فیڈریشن اور کو نسل میں مختلف عہدوں پر موجود سراج الدین قریشی نے انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کو ایک مایہ ناز ادارہ بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

اس مرتبہ ان کے پینل میں قوم ملت کی خدمت کا جذبہ رکھنے والے اور تعلیم یافتہ کئی نئے چہرے بھی شامل ہو ئے ہیں۔ ان میں مرکزی وزارت اقلیتی امور میں بطور خصوصی سکریٹری اپنی خدمات انجام دے چکے اور موجودہ وقت میں خصوصی سکریٹری منی پور گورنر اور خصوصی آفیسر کے عہدے پر منی پور بھون نئی دہلی میں فائز بدر الدین خان بھی ہیں۔ جو نہ صرف قوم ملت کی خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں بلکہ سینٹر کو مزید اعلی اور باوقار، بین الاقوامی سطح پر اعلی مقام دیکھنا چاہتے ہیں۔

سراج الدین قریشی کے ساتھ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کے انتخابات میں ایگزیکٹو ممبر کے امیدوار بدرالدین خان یکم اگست 1965 کو اترپردیش میں پیدا ہوئے۔ وہ صحافت اور مواصلات میں پوسٹ گریجوایٹ ہیں۔ بدر الدین خان کو قومی وقف ترقیاتی کارپوریشن کا بانی و ڈائرکٹر ہونے کا شرف حاصل ہے۔ جب حج وزارت خارجہ سے وزارت اقلیتی امور کو مکمل طور پر منتقل کیا گیا اس وقت بدرالدین خان ڈائرکٹرحج انچار تھے۔ انہوں نے وقف، اسکل ڈیولپمنٹ، حج، اسکولوں کی تعلیم، وزارت کے منصوبوں وغیرہ پر کام کرتے ہوئے مختلف ممالک کا دورہ کیا اور اپنی صلاحیت کا لوہا منوایا۔

آئی آئی سی سی کے الیکشن کے سلسلے میں روزنامہ ‘سچ کی آواز‘ سے خصوصی بات چیت میں بدرالدین خان نے بتایا کہ وہ سراج الدین قریشی اور ان کی قومی خدمات کو دیکھتے ہوئے ان کی ٹیم میں شامل ہوئے ہیں۔ انہوں نے انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کو اپنی محنت اور کاوشوں سے با وقار ادارہ بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے یہاں تک کہ خود کو بھی سینٹر کےلئے داؤ پر لگا دیا۔ تاکہ قوم و ملت کی خدمت ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کو دیکھ کر امت کو فخر ہو اس کےلئے سراج الدین قریشی کے ساتھ ان تمام کاموں کو مکمل کرانے کےلئے وزارت میں مختلف عہدوں کا تجربے سے سینٹر کو فائدہ پہنچانے کےلئے وہ سراج الدین قریشی کے ساتھ آئے ہیں۔ اگر الیکشن میں وہ جیت کر آتے ہیں تو سینٹٹر میں فلاحی کاموں کو مزید فروغ دیں گے، تاکہ اسلامک سینٹر اقلیت کے ایشوز کا فوکل پوائنٹ بن سکے۔ اسلامک سینٹر صرف ملک کا ہی نہیں بلکہ دنیا کا ایک مایہ ناز ادارہ ہے۔ جامعہ ہمدرد کے ساتھ آئی ایس کی کو چنگ کی ایس ایم خان کی قیادت میں شروعات کی گئی ہے اس کو مزید مستحکم کریں گے۔ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر جو قوم و ملت کا ایک عظیم سرمایہ ہے اس کو سنوارنا اور بہتر بنانا ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے تاکہ اس پر کو ئی داغ نہ آ سکے۔

سراج الدین قریشی اور ان کے پینل کے مقابلے میں الیکشن میں موجد سیویئر ٹیم کے سلسلے میں انہوں نے کہا کہ ہار جیت کا فیصلہ تو 6جنوری کو ووٹر کریں۔ اسلامک سینٹر ایک جمہوری ادارہ ہے، یہاں ہر ممبر کو الیکشن لڑ ننے کا حق حاصل ہے۔ لیکن ووٹر بیحد دانشور اور سمجھ دار ہیں، وہ جانتے ہیں کہ کون اچھا ہے، کون سینٹر کی خدمات کر سکتا ہے، وہ ایسے لوگ لائیں جو سینٹر کی خدمت کر سکیں۔ سینٹر کے الیکشن میں سراج صاحب کے ساتھ نئے لوگ بھی قوم کی خدمت کے جذبے کے ساتھ آئے ہیں۔ بدر الدین خان نے کہا کہ سراج الدین قریشی اور ان کی ٹیم انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کو مزید مایہ ناز ادارہ بنانے میں اہم کردار ادا کرے گی۔

اسلامک کلچرل سینٹر کے صدر عہدے کے امیدوار سراج الدین قریشی بتاتے ہیں کہ آئی آئی سی سی میں جمہوری طرز عمل کی بنیاد ہم نے ہی ڈالی تھی۔ جس وقت سینٹر محض دو ٹوٹے پھوٹے بنگلوں کی صورت میں کھڑا تھا اور اس کو مدد کی سخت ضرورت تھی تو انہوں نے 51 لاکھ روپیہ چندہ اور 50 لاکھ روپیہ بلاسودی قرض کے طور پر دیئے تھے۔ یہی نہیں جس وقت بینک سے قرض لینے کےلئے گارنٹی پر دستخط کرنے کا وقت آیا تو سب بھاگ کھڑے ہوئے تو انہوں نے اپنی کمپنی کے کاغذات گروی رکھ کر چار کروڑ کا قرض لیا اور سینٹر کی موجودہ شکل تعمیر کی۔ انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کے پانچ سالہ انتخابات میں صدارتی عہدہ کے امیدوار سراج الدین قریشی نے کہا ہے کہ وہ مرتے دم تک انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کے وقار کا تحفظ کریں گے اور اسے سیاسی بازی گروں کا اڈہ بننے نہیں دیں گے۔ سراج الدین قریشی کا کہنا ہے کہ ان کےلئے ہار جیت کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہے۔ اصل مسئلہ سینٹر کے تحفظ کا ہے اور میں جہاں بھی رہوں گا سینٹر کی حفاظت کے لئے ہر وقت تیار رہوں گا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے انڈیا اسلامک کلچرل سینٹر کو قوم کی امانت سمجھ کر اپنے خون سے سینچا ہے اور آج کچھ مفاد پرست لوگ محض مجھ سے دشمنی نکالنے کےلئے اس کے وقار کو ملیامیٹ کرنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ صدر عہدے کے امیدوار سراج الدین قریشی کے پینل میں نائب صدر کےلئے ایس ایم خان، بورڈ آف ٹرسٹیز کے لئے ابو ذر حسین خان احمد رضا، جمشید زیدی، محمد شمیم اور شرافت اللہ ہیں۔ ایگزیکٹو کمیٹی کے ممبران کےلئے بدر الدین خان بہار یو برقی، شہانہ بیگم اور سکندر حیات ہیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close