اترپردیشتازہ ترین خبریں

انصاف نہیں ملا تو اٹھائیں گے ہتھیار

اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے اتوار کو ہندوادی لیڈر کملیش تیواری کے اہل خانہ سے ملاقات کی اور انہیں انصاف کا بھروسہ دلایا حالانکہ ملاقات کے بعد کملیش کی ماں غیر مطمئن نظر آئیں اور انہوں نے ملاقات کے لئے انتظامیہ پر دباؤ بنانے کا الزام عائد کیا۔

ماں کسما تیواری نے وزیراعلی سے ملاقات کے بعد کہا کہ ان کا کنبہ وزیر اعلی سے ہوئی ملاقات سے مطمئن نہیں ہے۔ ہندو رسم و رواج کے مطابق اہل خانہ کو 13 دنوں تک کسی کے گھر جانے کی اجازت نہیں ہوتی ہے لیکن پولیس کے دباؤ میں انہیں لکھنؤ تک آنے پر مجبور ہونا پڑا۔ بیٹے کی موت سے دلبرداشتہ محترمہ تیواری نے کہا کہ اگر بیٹے کے قاتلوں کو پھانسی نہیں ملتی ہے تو وہ ہتھیار اٹھانے پر مجبور ہوں گی۔

ہندو سماج پارٹی کے جنر ل سکریٹری راجیش منی ترپاٹھ نے بتایا کہ ہم لوگوں نے وزیر اعلی سے 11 مطالبات کئے تھے۔ سبھی مطالبے منظور کر لئے گئے ہیں۔ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے انصاف کی یقین دہانی کرائی۔ متأثرہ کنبے کے ساتھ پولیس نے جو نازیبا سلوک کیا تھا اس کی بھی شکایت کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ مسٹر تیواری کا جمعہ کو ناکہ علاقے کے گنیش گنج واقع ان کی رہائش پر قتل کردیا گیا تھا۔ مقتول لیڈر کی ماں۔بیوی اور بچوں نے وزیر اعلی سے ان کی سرکاری رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ تقریبا 40 منٹ کی اس ملاقات کے دوران متأثرہ کنبے نے وزیر اعلی کے سامنے 11 مطالبات رکھے۔ متوقی کے ماں کسما تیواری نے کہا کہ ان کے بیٹے کے قاتلوں کو پھانسی سے کم کی سزا کچھ بھی منظور نہیں ہے۔ اہل خانہ لکھنؤ میں کملیش تیواری کی مورتی اور خورشید باغ کا نام بدل کر کملیش باغ رکھنے کا مطالبہ کررہا ہے۔

وزیر اعلی سے ملاقات کے وقت ڈائرکٹر جنرل آف پولیس اوپی سنگھ بھی موجود تھے۔ ان کے ساتھ ایس آئی ٹی انچارج انسپکٹر جنرل آف پولیس ایس کے بھگت بھی تھے۔ وزیر اعلی نے کملیش تیواری کے کنبے کے سامنے ہی او پی سنگھ سے قتل کی جانچ میں اب تک کی تفصیلات کی رپورٹ بھی طلب کیا اور قاتلوں تک جلد از جلد رسائی کی ہدایت دی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close