تازہ ترین خبریںدلی نامہ

اناج منڈی آتشزدگی میں جانچ کا حکم، مہلوکین کے لئے معاوضہ کا اعلان

وزیر اعلی کجریوال سمیت وزیر اعظم راحت فنڈ، بی جے پی اور بہار حکوت نے معاوضہ کا کیا اعلان٭ فیکٹری،گودام مالک کے خلاف کیس درج، پولیس کر رہی ہے معاملے کی تحقیقات

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
راجدھانی میں پرانی دہلی کی تنگ گلیوں میں واقع اناج منڈی کا علاقہ آج صبح اس وقت چیخ و پکار سے گونج اٹھا جب وہاں واقع ایک پانچ منزلہ فیکٹری، گو دام کو آگ بھڑک اٹھی، آگ دوسری منزل پر پلاسٹک کی فیکٹری، گودام میں لگی تھی، دیکھتے ہی دیکھتے آگ نے پوری بلڈنگ کو اپنی چپیٹ میں لے لیا۔

مقامی لوگوں نے اور اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچے فائر برگیڈ کے عملے نے اس زبردست پھیل رہی آگ کو بجھانے کی کوشش کے ساتھ انسانی زندگیوں کو بچانے کی جی توڑ کوشش کی۔ کافی مشقت کے بعد آگ تو بجھا لی گئی لیکن اس میں چالیس سے زائد انسانی زندگیاں نوالہ عجل بن گئیں۔ جبکہ کافی لوگ بری طرح جھلس گئے، زخمیوں کو آر ایم ایل اسپتال، ہندو راؤ اسپتال اور لوک نائک اسپتال میں لایا گیا ہے۔ جہاں چالیس سے زائد افراد کی موت ہونے کی خبر ہے۔ جبکہ زخمیوں کا علاج کیا جا رہا ہے۔ وہیں پولیس نے فیکٹری، گو دام کے مالک ریحان کے خلاف معاملہ درج کر لیا ہے۔

آتشزدگی کے ہولناک سانحہ پر دہلی حکومت اور وزیر اعظم راحت فنڈ، بہار حکومت اور بی جے پی نے بھی مر نے والوں کے اہل خانہ کو معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔ وہیں دہلی حکومت کے وزیر محصولیات کیلاش گہلوت نے وسطی ضلع مجسٹریٹ کو آتشزدگی کی جانچ کرکے سات دن میں رپورٹ دینے کی ہدایت دی ہے۔ دہلی کے وزیر ستیندر جین اور وزیر عمران حسین کے ساتھ موقع پر پہنچے دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال نے دہلی حکومت کی جانب سے مرنے والوں کے اہل خانہ کو 10-10 لاکھ روپے معاوضہ، زخمیوں کو مفت علاج کے ساتھ ایک ایک لاکھ رو پے معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعلی اروند کجریوال نے وزیر عمران حسین اور ستیندر جین کے ساتھ ایل این جے پی اسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی۔ وہیں وزیر عمران حسین اور وزیر ستیندر جین نے آگ پھنسے ہو ئی انسانی زندگیوں کو بچا نے کیلئے جان کی بازی لگا کر 11 لوگوں کو بچا نے والے فائرمین راجیش سے بھی ملاقات کی اور ان کی بہادری کی جم کر ستائش کی۔

وہیں وزیر اعظم راخت فنڈ سے مرنے والوں کو دو دو لاکاھ رو پے اور شدید زخمیوں کو 50-50 ہزار رو پے دینے کا پی ایم او سے اعلان کیاگیا ہے۔ ادھر موقع پر پہنچے دہلی بی جے پی کے صدر منوج تیواری نے اعلان کیا کہ بی جے پی متاثرین کے ساتھ ہے، بی جے پی مر نے والوں کے اہل خانہ کو 5-5 لاکھ روپے اور زخمیوں کو 25-25 ہزار روپے کی امداد کرے گی۔ بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے بھی بہار صوبہ سے تعلق رکھنے والے آتشزدگی میں مرنے والوں کے اہل خانہ کودو دو لاکھ رو پے کی امداد کرنے کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعلی اروند کجریوال نے سانحہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوے کہاکہ یہ بہت افسوسناک واقعہ ہے اس کے جانچ کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔ وزیر اعلی نے کہاکہ ہمارے سب برابر ہیں خواہ وہ کہیں کا بھی رہنے والا ہی کیوں نہ ہو۔

تفصیل کے مطابق پرانی دہلی کے فلمستان سنیما کے قریب اناج منڈی کے ایک چار منزلہ گودام میں آج صبح آ گ لگ گئی، آگ دوسری منزل کے پلاسٹک کے گودام میں لگی جس نے اوپری منزل کے گتّے کے گودام کو بھی دیکھتے دیکھتے اپنی چپیٹ میں لے لیا۔ اتوار کا چھٹی کا دن ہونے کے سبب یہاں کام کرنے والے مزدور وہیں سو رہے تھے جن کو آگ کے بڑھ جانے اور چاروں طرف تیز دھواں پھیل جانے پر بھاگنے کا راستہ بھی نہ مل سکا اور کئی لوگوں کی سانس گھٹ جانے سے موقع پر ہی موت ہو گئی۔ جبکہ بہت سے لوگ آتشزدگی کی زد میں آگئے۔ مقامی لوگوں نے فائر برگیڈ کو خبر کرتے ہوئے دوڑ کر آگ بجھانے اور انسانی زندگیاں بچانے کی کو شش کی۔ مقامی لوگ، پولیس اہلکار اورفائر برگیڈ کے جوان کئی زندگیاں بچانے میں کامیاب بھی ہوئے لیکن چالیس سے زائد زندگیں کو عجل اپنا شکار بنا چکی تھی۔

قابل ذکر ہے کہ پرانی دہلی میں فیکٹریوں، کارخانوں اور گو داموں میں کام کرنے والے اکثر مزور وہیں پرہی سوتے ہیں۔ آج اتوار کا چھٹی کا دن ہونے کے سبب ان کو جلدی آگ لگنے کا پتا بھی نہیں لگ سکا اور اکثر کی موت دھویں سے دم گھٹنے سے بتا ئی جا رہی ہے۔ پرانی دہلی کی تنگ گلیوں کے سبب یہاں راحتی کا موں میں دقت کا سامنا آتا ہے، تنگ گلیوں کے سبب فائر برغیڈ کے عملے کو کافی مشقت اٹھانی پڑی۔

دہلی پولیس کے وسطی ضلع کے ڈی سی پی مندیپ سنگھ رندھاوا نے اس سلسلے میں کہا ہے کہ یہ شارٹ سرکٹ کا معاملہ نظر آتا ہے، یہاں کافی پلاسٹک ہونے کے سبب دھواں بھی زیادہ ہوا ہے، معاملے کو کرا ئم برانچ کو سونپ دیا گیا اور گو دام کے مالک ریحان کے خلاف کیس درج کر لیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاک ہماری پہلی کوشش لوگوں کو صحیح سلامت نکالنے کی تھی، لو گوں کو نکالا جا چکا ہے اور پو ری بلڈنگ کی تلاشی بھی لی جا چکی ہے اندر کوئی نہیں ہے اور ایف ایس ایل کی ٹیم اس کا معائنہ کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ دہلی پولیس بھی اس کی مکمل تفتیش کرے گی اور قصورواروں کو سزا بھی دی جا ئے گی۔

وہیں دہلی میں آتشزدگی کے اتنے بڑے پہلے حادثے،جس میں چا لیس سے زیادہ موتیں ہو ئی ہوں کے بعد جائے واقعہ اور سب سے زیادہ زخمیوں کو لائے جانے والے ایل این جے پی اسپتال میں سیاسی لیڈران کی آمد کا سلسلہ بھی جاری ہے۔موقع پرمرکزی وزیر ہردیپ سنگھ پوری،دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال، ممبر پارلیمنٹ پرویش ورما، منوج تیواری، دہلی کے وزیر عمران حسین، ستیندر جین، ایم ایل اے وجیندر گپتا، منجندر سنگھ سرسا، سابق ممبر پارلیمنٹ جے پرکاش اگروال، دہلی کا نگریس کے صدر سبھاش چو پڑا سمیت دیگر لیڈران پہنچ رہے ہیں۔آتشزدگی میں سب سے متاثر اور مر نے والے سمستی پور کے ہیں،سمستی پور کے رکن پارلیمنٹ بھی این جے پی اسپتال پہنچے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close