اترپردیش

اناؤ معاملہ: مرنے والی لڑکی کے اہل خانہ سے ملے اکھلیش، کیا مدد کا وعدہ

اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو آبروریزی کی شکار لڑکی کی موت کے بعد ہفتہ کے روز ان کے اہل خانہ سے ملنے کے لئے اناؤ پہنچے۔ رشتہ داروں سے مل کر اکھلیش نے ہر ممکن مدد کا وعدہ بھی کیا۔

اناؤ میں پانچ دسمبر کو آبروریزی کا شکار لڑکی پرملزمین نے پٹرول ڈال کر اسے جلا کرمارنے کی کوشش کی تھی۔ اس میں وہ 90 فیصد جل گئی تھی۔ چشمدید گواہوں کے مطابق متاثرہ لڑکی آگ لگنے کے بعد تقریباً ایک کلو میٹر تک مدد کی اپیل لگاتے ہوئے دوڑتی رہی تھی۔ یہاں تک کہ اس نے خود ہی 112 پر فون کر پولیس کو واقعہ کی اطلاع دی تھی، جس کے بعد وہاں پولیس کی ٹیم اور ایمبولنس پہنچی تھی۔ 44 گھنٹے تک زندگی سے جنگ لڑنے کے بعد آخر میں اس کی سانسیں تھم گئیں۔ آبروریزی کی شکار لڑکی اناؤ ں واقع اس کے گاؤں میں د ادی-بابا کے پاس ہی دفن کیا گیا۔ اکھلیش کے ساتھ سابق ممبر اسمبلی ادے راج یادو، ایم ایل سی سنیل ساجن، راجندر چودھری موجود رہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close