تازہ ترین خبریںدلی نامہ

اضافی حج کوٹے میں دہلی کو کم سے کم 2ہزار سیٹیں دی جائیں

گروپ آف حج کا مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی سے مطالبہ، پی ٹی اوز کو مزید حج کوٹہ دینا حج کمیٹیوں کی حق تلفی

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ ہند پر ہندوستانی حاجیوں کےلئے بڑھایا گیا اضافی حج کوٹہ حکومت کی جانب سے ریاستی حج کمیٹیوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ جس میں حج کمیٹی کے ذریعہ حج بیت اللہ کی سعادت کےلئے جانے کے خواہشمند حاجیوں کی حق تلفی کرتے ہوئے اضافی کوٹے میں سے پانچ ہزار سیٹیں پرائیوٹ ٹور آپریٹرس کو دیدی گئی ہیں۔ جبکہ ملک کے سب سے بڑے امبارکیشن پوائنٹ دہلی کو، جہاں کوٹے سے کئی گنا زیادہ حج درخواست دینے والے لوگ ہیں محض 397 سیٹیں ہی دی گئی ہیں۔ جس پر عازمین حج کی خدمات انجام دینے والی حج رضا کار تنظیموں کی متحدہ تنظیم گروپ آف حج اینڈ سوشل ورک آرگنا ئزیشن نے سخت اعتراض جتایا ہے۔ گروپ آف حج نے پی ٹی اوز کو دوبارہ کوٹہ بڑھاتے ہوئے دی جا رہی مزید 5ہزار سے زائد سیٹیں دینے کی مخالفت کی ہے اور مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی سے دہلی کا مزیدحج کوٹہ بڑھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی کی کوششوں سے گزشتہ سال 5 ہزار کوٹہ بڑھنے کے بعد ایک بار پھر ہندوستان کے حج کوٹے میں زبردست ریکارڈ اضافہ ہوا ہے اور ہندوستان کا حج کوٹہ بڑھ کر تقریباً دو لاکھ کے قریب ہو گیا ہے۔ یہاں یہ بھی بتاتے چلیں کہ گزشتہ سال بڑھا ہوا 5 ہزار کا حج کوٹہ حکومت نے اس سال پورا کا پورا پرائیوٹ ٹور آپریٹرس کو دیدیا گیا ہے، جس سے ان کا کوٹہ 50 ہزار ہو گیا ہے۔ لیکن سعودی ولی عہد کی جانب سے بڑھائے گئے ہندوستانی حج کوٹے میں سے بھی حج کمیٹی کے ذریعہ حج پر جانے کے خواہشمندوں کی حق تلفی کی جا رہی ہے اور یہ جانتے ہوئے بھی کہ پرائیوٹ ٹور آپریٹرس حاجیوں سے 4ساڑھے چار لاکھ اور پانچ لاکھ روپے تک فی حاجی وصول کرتے ہیں، تب بھی حکومت ایک مرتبہ پھر پرائیوٹ ٹورز آپریٹرس کو اضافی کوٹے میں سے بھی 5 ہزار سے زیادہ سیٹیں دے رہی ہے۔ جس کی حج رضا کار تنظیموں کی جانب سے مخالفت بھی شروع ہو گئی ہے۔

اس سلسلے میں گروپ آف حج اینڈ سوشل ورک آرگنائزیشن کی ایک اہم میٹنگ گروپ کے خازن اور سینئر حج رضا کارحاجی محمد ظہور اٹیچی والوں کے آفس دریا گنج میں منعقد ہوئی۔ جس میں گروپ آف حج کے تمام عہدیداران اور ممبران نے شرکت کرکے مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی سے مطالبہ کیا کہ وہ حج کمیٹی کی حق تلفی نہ کرتے ہوئے پرائیوٹ ٹور آپریٹرس کے بجائے تمام اضافی کوٹہ حج کمیٹیوں میں تقسیم کریں، جبکہ دہلی میں حج درخواست دینے والوں کی زبردست تعداد کے پیش نظر دہلی کے حج کوٹے میں کم سے کم 2 ہزار سیٹوں کا اضافہ کیا جائے۔

حاجی ظہور اٹیچی والے کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں گروپ آف حج کے عہدیداران نے وزارت اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی سے درخواست کی کہ حج کے اضافی کوٹے سے دہلی کو جو 397سیٹیں ملی ہیں وہ دہلی کی آبادی کے تناسب سے کم ہیں جبکہ پرائیویٹ ٹور آپریٹرس کو 5000 ہزار سیٹیں مختص کر دی گئی ہیں، جو تمام ریاستوں سے جانے والے عازمین حج کے ساتھ ناانصافی اور ان کی حق تلفی ہے۔ گروپ آف حج کے عہدیداران نے وزارت اقلیتی امور کے اس فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے یہ مطالبہ کرتے ہیں کہ دہلی سے جانے والے عازمین حج کے کوٹے میں 2000 ہزار سیٹوں کا اضافہ کیا جائے۔

حاجی ظہور اٹیچی والے اور دیگر عہدیداران نے وزیر موصوف کے اس وعدہ کو یاد دلایا کہ جو دو سال قبل حج کانفرنس میں کیا گیا تھا۔ وزارت اقلیتی امور نے 2019 تک بحری جہاز سے ہندوستانی حاجیوں کو فریضہ حج کےلئے روانہ کرنے کا وعدہ کیا تھا، مگر آج تک اس سلسلہ میں کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا۔ گروپ آف حج کے عہدیداران نے وزارت اقلیتی امور سے مطالبہ کیا ہے کہ جلد ہی بحری جہاز سے فریضہ حج کی ادائیگی کا سلسلہ شروع کیا جائے تاکہ عازمین حج کم خرچ میں اس فریضہ کو ادا کر سکیں۔

گروپ آف حج اینڈ سوشل ورک آرگنائزیشن کی اس اہم میٹنگ میں حج 2019 کے متعلق بات چیت میں اس بات پر بھی غور وفکر کیا گیا کہ گزشتہ سال کی طرح اس سال عازمین حج کو کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ گروپ آف کے عہدے داران نے حج مشن سے تعلق رکھنے والی تمام ایجنسیوں سے امید ظاہر کی کہ اس سال حج انتظامات پچھلے سال کے مقابلے بہتر کئے جائیں گے۔ میٹنگ میں نظامت کے فرائض گروپ کے جنرل سکریٹری حاجی محمد فاضل نے انجام دیئے۔ میٹنگ میں گروپ آف حج کے صدر حاجی ادریس خان، حاجی مستقیم، حاجی محمد صابرین، حاجی ریاض الدین، حاجی محمد فاضل، حاجی خوشنود، حاجی ریاض احمد عرف راجو، حاجی محمد زاہد، حاجی اسعد میاں، حاجی سید حسن شاہ، حاجی محمد اسلم، حاجی جمیل، صابر علی ببلو، حاجی محمد اسلم وغیرہ نے شرکت کی۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close