تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

احتجاجی مظاہروں سے ملا ہے قومی یکجہتی کو فروغ

مفتی مکرم کا حکومت سے مطالبہ، شہریت ترمیمی قانون آئین کے مطابق کیا جائے

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی کی شاہی فتح پوری مسجد کے امام ڈاکٹر مفتی مکرم احمد نے آج حکومت ہند سے مطالبہ کیا کہ شہریت ترمیمی قانون آئین کے مطابق کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ شہریت ترمیمی قانون چونکہ ہند کے دستور کے برخلاف بنایا گیا ہے، جس میں انصاف اور مساوات کو بالائے طاق رکھ کر مذہبی تفریق کی گئی ہے۔ لہذا حکومت اسے دستور کی منشا کے مطابق کرے تو بہتر ہوگا۔ سپریم کورٹ کے سینئر وکلاء بھی اس قانون کے خلاف ہیں۔ آج مفتی مکرم شاہی فتح پوری مسجد میں نماز جمعہ سے قبل خطاب کر رہے تھے۔

مفتی مکرم نے کہاکہ پورے ہندوستان میں مظاہروں میں مرد اور خواتین سڑکوں پر ہیں خاص بات یہ ہے کہ مظاہروں میں ہر فرقہ کے لوگ موجود ہیں اور مظاہرے قومی یکجہتی کی بہترین مثال ہیں۔ 5جنوری کو شاہین باغ کے مظاہرے میں پنڈتوں نے ’ہون‘ کیا تو سکھ گرنتھیوں نے پاٹھ کیا۔ عیسائیوں نے بائبل پڑھی اور مسلمانوں نے قرآن کریم کی تلاوت کی جس میں سب فرقہ کے لوگ شامل تھے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو سب سے پہلے بے روزگاری کو ختم کرنا چاہئے اور مہنگائی کو کنڑول کرنے کی طرف توجہ دینی چاہئے اور این آرسی پروگرام کو منسوخ کر دینا چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ ہندستان میں غریبوں اور ناخواندہ لوگوں کی اکثریت ہے جن کے پاس یا تو دستاویزات نہیں ہیں اور اگر ہیں تو ان میں ناموں کی کتابت میں اور املا میں خامیاں ہیں۔ ناخواندہ ہونے کی وجہ سے زیادہ تر لوگ اپنے دستاویزات میں ناموں کی املا درست نہیں کرا پاتے۔حکومت کو چاہئے کہ زیادہ سے زیادہ مقامات پر ایسی سہولت فراہم کرے کہ لوگ اپنے سب دستاویزات کو آسانی سے مکمل کریں اور ناموں کے فرق کو درست کرا سکیں۔

مفتی مکرم نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل سے پُر زور اپیل کی کہ فلسطینی عوام بالخصوص خواتین، بچوں اور بیماروں کے ساتھ ہمدردی کرتے ہوئے ان کے ساتھ انصاف کیا جائے اور اسرائیل کے ظلم و تشدد کو بند کرایا جائے۔ یہودی آبادکاری کے لئے فلسطینی زمین پر مکانات کی تعمیر کی اجازت ہرگز نہ دی جائے اور غزہ پر ہوائی حملوں کی مذمت کی جائے۔

مفتی محمد مکرم احمد نےخطاب میں کہا کہ ہر ایک کو اللہ تعالی کے حکم کو ماننا لازم اور ضروری ہے۔ بے شک اللہ تعالی حکم دیتا ہے کہ انصاف کرو اور احسان کرو نیز رشتہ داروں کے حقوق ادا کرو اور فحش بے ہودہ ناجائز باتوں سے اور ظلم سے دور رہو۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close