اترپردیشتازہ ترین خبریں

آگرہ-لکھنؤ ایکسپریس وے پر خوفناک حادثہ: 7 افراد ہلاک جبکہ 34 زخمی، عیادت کے لئے پہنچے اکھلیش

اتر پردیش میں مین پوری کے كرهل علاقے میں آگرہ- لکھنؤ ایکسپریس وے پر ایک تیز رفتار پرائیویٹ بس آگے چل رہے ٹرک سے ٹکراکر الٹ جانے سے سات افراد کی موت ہوگئی اور 30 دیگر زخمی ہو گئے۔ جس میں سے کئی زخمیوں کی حالت کافی نازک بتائی جا رہی ہے۔

پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ آگرہ سے لکھنؤ جارہی تیز رفتار پرائیویٹ بس ہفتہ کو دیر رات آگرہ-لکھنؤ ایکسپریس وے پر كرهل علاقے میں87 کلو میٹرکے قریب آگے جا رہے ٹرک سے جا ٹکرانے کے بعد بے قابو ہوکر پلٹ گئی۔ اس حادثے میں بس میں سوار سات مسافروں کی موقع پر ہی موت ہو گئی اور 30 دیگر زخمی ہو گئے۔ حادثہ کی اطلاع ملتے ہی کئی تھانوں کی پولیس موقع پر پہنچ گئی۔ تمام زخمیوں کو سیفئی میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا ہے۔

اس دوران سماج وادی پارٹی (ایس پی) سربراہ اکھلیش یادو نے حادثے میں زخمی افراد کی عیادت کرنے کے لئے اٹاوہ کے سیفئی میڈیکل کالج پہنچے، مسٹر یادو نے کہا کہ اگر یہ اسپتال نہ ہوتا تو زخمیوں کو جھانسی، گوالیار، آگرہ، دہلی جانا پڑتا۔ یہ عوام بتائیں گے کہ یہ اتحاد غریبوں کی خدمات والا ہے یا جو بی جے پی کہ رہی ہے وہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ’’یہ سیاست کا وقت نہیں ہے۔ پھر بھی کہتا ہوں، گاؤں میں جانوروں کو’گلا گھوٹو‘ بیماری ہوجاتی ہے اسی طرح سے بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی) کو ’کام روکو‘ بیماری لاحق ہے۔ کہیں کام چل رہا ہے تو وہ روک دیں گے۔ غریبوں کو پنشن نہیں مل رہی ہے۔ پولیس کا 100 نمبر سروس کو برباد کردیا۔ اسپتال بھی برباد کرنا چاہتے ہیں۔ بی جے پی کوئی کام نہیں کررہی ہے۔ اس حکومت نے ملک کو برباد کردیا ہے۔ ایسی پارٹی کو عوام سبق سکھائیں گے۔اس سے قبل مسٹر یادو نے زخمیوں کا حال چال معلوم کیا اور ڈاکٹروں کی ضروری ہدایات دیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close